مشال قتل کیس : مرکزی ملزم عارف 3 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے
The news is by your side.

Advertisement

مشال قتل کیس : مرکزی ملزم عارف 3 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

پشاور: مقامی عدالت نے مشال قتل کیس کے مرکزی ملزم عارف خان کو تین روزہ جسمانی ریمانڈ پرپولیس کے حوالے کردیا۔

تفصیلات کے مطابق مشال کیس میں مردان سے گرفتار مرکزی ملزم عارف خان کو پشاور کی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا، عدالت نے ملزم عارف کو تین روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

مشال قتل کیس میں گرفتار ملزمان کی تعداد انسٹھ ہوگئی ہے۔

دوسری جانب کیس میں رہائی پانے والوں کے خلاف مشال خان کےوالد نےسپریم کورٹ سےنوٹس لینےکی اپیل کردی، والد نے مطالبہ ہے کیا ہے کہ سپریم کورٹ نوٹس لے کر ملزمان کی رہائی کافیصلہ معطل کرے۔


مزید پڑھیں : مشال قتل کیس کا مرکزی ملزم عارف گرفتار


گذشتہ روز  خیبرپختون خوا پولیس نے مشال خان قتل کیس کے مرکزی ملزم عارف کو 10 ماہ گرفتار کیا تھا، عارف رانگی پی ٹی آئی کا کونسلر ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ ماہ 7 فروری کو ایبٹ آباد انسداد دہشت گردی نے مشال خان کے قتل کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے ایک ملزم کو سزائے موت، پانچ کو پچیس، پچیس سال اور پچیس ملزمان کو تین ،تین سال کی سزاسنائی گئی تھی۔ جبکہ 26 ملزمان کو رہا کردیا گیا تھا۔


مزید پڑھیں : مشعال خان قتل کیس: ایک ملزم کو سزائے موت، 5 ملزمان کو 25، 25 سال قید کی سزا کا حکم


جس کے بعد مشال کے بھائی نے مقدمے میں نامزد رہائی پانے والے 26 ملزمان کی رہائی کے خلاف ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی تھی، جس میں عدالت سے مذکورہ افراد کو سزا دینے کی استدعا کی گئی۔

واضح رہے کہ مردان کی عبدالولی یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کرنے والے مشعال خان کو گزشتہ سال 13 اپریل کو طالب علموں کے جم غفیر نے یونیورسٹی کمپلیکس میں اہانت مذہب کا الزام عائد کر کے بدترین تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد گولی مار کر قتل کردیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں