The news is by your side.

Advertisement

سانحہ مستونگ: سہولت کار مقامی ہیں، شناخت ہوگئی، ڈی آئی جی سی ٹی ڈی

کوئٹہ: ڈی آئی جی سی ٹی ڈی اعتزاز گورایہ نے کہا ہے کہ مستونگ واقعے کے پہلے دن سے تحقیقات کررہے تھے، خودکش حملہ آور سمیت سہولت کاروں کی شناخت ہوگئی ہے، سہولت کار مستونگ کے رہائشی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈی آئی جی سی ٹی ڈی اعتزاز گورایہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ مستونگ میں 150 افراد شہید، 250 زخمی ہوئے، خودکش حملہ آور کی شناخت ہوگئی ہے، خودکش حملہ آور کا نام حفیظ، میرپور ساکھرو ٹھٹھہ کا رہائشی جبکہ بروہی زبان سے لاعلم تھا۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نے کہا کہ حملہ آور کارنر میٹنگ میں چوتھی لائن میں بیٹھا تھا، اسٹیج کے سامنے آکر خودکو اُڑایا، حملہ آور نے بی این پی کا جھنڈا اُٹھایا ہوا تھا، حملہ آور کے والد کے مطابق حفیظ اور اس کی بہنیں افغانستان گئی ہوئی تھیں۔

اعتزاز گورایہ کے مطابق سہولت کار گروپ کا بھی سراغ ملا ہے، جو شخص حملہ آور کو لایا وہ مقامی تھا، کارنر میٹنگ میں کسی بھی شخص کو چیک نہیں کیا گیا، اکٹھے کیے گئے فرانزک شواہد کا تجزیہ کیا جارہا ہے۔

اعتزاز گورایہ نے کہا کہ گرفتاری کے لیے آپریشنز کررہے ہیں، چاغی سے تاحال کوئی سہولت کار گرفتار نہیں ہوا ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز ڈائریکٹر جنرل کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ بلوچستان اعتزاز گورایہ کا کہنا تھا کہ صوبے کے دیگر سیاسی رہنماؤں پر حملے کا خدشہ ہے، دہشت گرد سیاسی جماعت کے لوگوں کو نشانہ بنانا چاہتے ہیں۔

یاد رہے کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے مستونگ دھماکے کو خودکش قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ دھماکے میں 16 سے 20 کلو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں