The news is by your side.

Advertisement

ریٹائرمنٹ کا معاملہ؛ محمدعامر کو منانے کی کوششیں

انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے معاملے پر پاکستان کرکٹ بورڈ نے فاسٹ بولر محمد عامر کو ‏منانے کی کوششیں تیز کر دیں۔

چیف ایگزیکٹیو پی سی بی وسیم خان کا کہنا ہے کہ عامر سے بہت اچھے تعلقات ہیں، اُن سے دو ‏تین بار ملاقات بھی ہوئی، بابر اعظم اور عامر کراچی کنگز میں ساتھ کھیل رہے ہیں، وہ اُن سے بات ‏کریں گے۔

وسیم خان نے کہا کہ کپتان بابراعظم محمدعامر سےبات کریں گے اور کوچز اور عامر کے درمیان ‏صلح کی کوشش کریں گے۔

محمد عامر نے دسمبر 2020 میں انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا، محمد عامر نے ‏ریٹائرمنٹ لینے کی وجوہات بتاتے ہوئے تفصیلی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے بتایا تھا کہ ریٹائرمنٹ کا ‏فیصلہ جذباتی نہیں سوچ سمجھ کر فیصلہ کیا ۔

عامر نے کہا کہ ٹیم سے ڈراپ ہونے پر ریٹائرمنٹ نہیں لی، ٹیم مینجمنٹ نے لوگوں کے دماغ میں ‏ڈالا میں ملک سے کھیلنا نہیں چاہتا، مکی آرتھر اور گزشتہ مینجمنٹ نے ٹیسٹ کرکٹ سے ‏ریٹائرمنٹ لینے پر سپورٹ کیا تھا، احسان مانی اور وسیم خان سے کوئی اختلاف نہیں‌ ہے میری ‏ریٹائرمنٹ‌ لینے کی وجہ ٹیم مینجمنٹ کا رویہ ہے

فاسٹ بولر کا کہنا تھا کہ موجودہ مینجمنٹ پیچھے ہی پڑ گئی ، بار بار الزام لگایا کہ لیگ کے لیے ‏ٹیسٹ کرکٹ چھوڑی ہے، سابق کرکٹرز 2010 کی غلطی کو جواز بنا پر مجھ پر تنقید کرتے ہیں۔

انہوں‌ نے کہا کہ یہ سب چیزیں‌ مجھے پریشان کررہی تھیں‌، میں‌ کمزور نہیں‌ ہوں‌ اگر کمزور ہوتا تو ‏‏2010 کے بعد کرکٹ میں‌ نہیں ‌آتا، میں‌ واپس آیا اور ایشیا کپ ، چیمپئنز ٹرافی 2017 اور ورلڈ کپ ‏میں‌ اچھی کارکردگی دکھائی۔

محمد عامر نے اپنے ویڈیو بیان میں کہا کہ اپنے کئے نے سزا کاٹی اور معافی بھی مانگی اس کے ‏بعد ٹیم میں کم بیک کیا لیکن میرا ماضی مجھے یاد دلایا جاتا ہے، انہوں‌ نے کہا کہ ریٹائرمنٹ کے ‏فیصلے سے بورڈ‌ کو آگاہ کردیا ہے، مداح‌ مجھ سے ریٹائرمنٹ واپس لینے کی درخواست کررہے ہیں ‏لیکن میں‌ نے جذباتی طور پر فیصلہ نہیں‌ لیا.‏

فاسٹ بولر اس وقت پی ایس ایل کی سب سے مقبول فرنچائز کراچی کنگز سے وابستہ ہیں اور وہ ‏مستقل رکن کی حیثیت سے ٹیم کے ساتھ ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں