The news is by your side.

Advertisement

الیکشن وقت پر ہونے کے بارے میں کچھ کہنے کی پوزیشن میں نہیں: مولانا فضل الرحمان

لاہور: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ الیکشن وقت ہوں گے یا نہیں، اس بابت ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا۔

تفصیلات کے مطابق مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ الیکشن وقت پر ہونے کے بارے میں کچھ کہنا مشکل ہے، آج ادارے حکمرانوں اور حکمران اپوزیشن میں نظر آرہے ہیں.

سندھ میں متحدہ مجلس عمل کوعوامی مقبولیت ملی ہے، پیپلزپارٹی کو بھی احساس ہو گیا ہے کہ سندھ میں اصل مقابلہ متحدہ مجلس عمل سے ہوگا

مولانا فضل الرحمان

انھوں نے کہا کہ آج تمام حکمران کٹہرے میں کھڑے ہیں، یہ کہاں‌ کی جمہوریت ہے، عدلیہ میں ڈھائی لاکھ کیسز زیرالتوا ہیں، انھیں نمٹایا جائے.

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ سینیٹ کے الیکشن کو تسلیم کرتے ہیں، البتہ اس پراعتراضات ہیں، رضاربانی کا نام تسلیم کیا جاتا تو جمہوریت کا مثبت چہرہ سامنے آتا.

ایک سوال کے جواب میں‌ انھوں‌ نے کہا کہ سینیٹ‌ انتخابات میں‌ الزام صرف خریداروں پر آرہا ہے، مگر جو افراد بک گئے، ان پر کوئی الزام نہیں لگ رہا.

ایک سوال کے جواب میں‌ انھوں نے کہا کہ ہم ایم ایم اے کے جھنڈے اورانتخابی نشان کتاب سے الیکشن لڑیں گے، یکجہتی قائم ہو چکی ہے، اب تنظیم سازی کے مرحلے سے گزرہے ہیں.

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ایم ایم اے کا مختلف پارٹیوں سے سیٹ تو سیٹ ایڈجسمنٹ کا امکان ہے، سیاسی کارکن بندوق نہیں اٹھاتا، الیکشن لڑتا ہے.

ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں متحدہ مجلس عمل کوعوامی مقبولیت ملی ہے، پیپلزپارٹی کو بھی احساس ہو گیا ہے کہ سندھ میں اصل مقابلہ متحدہ مجلس عمل سے ہوگا.

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ الیکشن قریب ہیں، ہر جماعت اپنے مورچے میں چلی گئی ہے۔


فاٹا کو سی پیک کا حصہ بنایا جائے: مولانا فضل الرحمان


ملک میں اسلامی انقلاب کیلئے نئے سفرکا آغاز کریں گے، مولانا فضل الرحمان


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں