The news is by your side.

Advertisement

نکاح کے دوران دُلہا کے غلط عربی تلفظ سے مولوی کو ہوا شک، حیرت انگیز انکشاف!

نئی دہلی : ریاست اترپردیش میں مسلمان لڑکی سے پسند کی شادی کےلیے ہندو لڑکے کا مسلمان بننے کا ڈرامہ نکاح خواں نے ناکام بنا دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ہندو نوجوان کے لڑکی محبت میں مسلمان بننے کا واقعہ بھارتی ریاست اترپردیش میں پیش آیا، جہاں نکاح کے وقت عربی تلفظ میں غلطی کرنے پر مولونا کو دلہے پر شک ہوا۔

نکاح خواں اور دیگر افراد شبے کی بنیاد پر دلہے کی تلاشی تو جیب سے پین کارڈ برآمد ہوا جس پر تصویر تو دلہے کی تھی مگر نام ہندوؤں والا تھا، جس پر انکشاف ہوا کہ مسلمان ہونے کا دعویدار حقیقت میں ہندو ہے۔

دلہے کے غیر مسلم ہونے کے انکشاف پر دلہن کے اہل خانہ نے دلہے کی درگت بنا ڈالی اور ساتھ آنے والے باراتیوں کو بھی پکڑلیا۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ سدھارتھ نگر کے ایک نوجوان کی دو سال قبل کولہوئی علاقے کی لڑکی سے فیس بک پر دوستی ہوئی اور نوبت شادی تک آن پہنچ لیکن لڑکی کو معلوم تھا کہ اس کے گھر والے غیر مسلم سے اس کا عقد نہیں کریں گے۔

لڑکی نے سب کچھ جانتے ہوئے بھی اپنے اہل خانہ نے حقیقت چھپائی اور لڑکا چند افراد کے ہمراہ بارات لیکر لڑکی کے گھر پہنچ گیا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق سب کچھ ٹھیک چل رہا تھا کہ دلہے کہ عربی کے تلفظ نے دلہے کی پول کھول دی۔

لڑکی کے اہل خانہ نے حقیقت سامنے آنے پر دلہے اور باراتیوں کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا اور شادی سے بھی انکار کردیا مگر معاملہ تھانے پہنچنے کے باوجود لڑکی اسی نوجوان سے شادی کرنے پر بضد تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں