The news is by your side.

Advertisement

میئر کو کام سے روک کر کراچی کو یتیم کر دیا گیا، اہلیہ وسیم اختر

کراچی: مئیر کراچی وسیم اختر کی اہلیہ نائلہ وسیم نے وسیم اختر کے جیل سے جاری بیان کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بارہ مئی کی تحقیقات کرنی ہے تو سب سے کی جائیں ،وسیم اختر کو کام سے روک کر کراچی کو یتیم کر دیا گیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دیگر اہل خانہ کے ہمراہ کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، وسیم اختر کی اہلیہ نائلہ وسیم کا کہنا تھا کہ میئر کراچی وسیم اختر کسی سیاسی پارٹی کے نہیں بلکہ عوام کے نمائندے ہیں۔

پریس کانفرنس میں نائلہ وسیم نے ایک بار پھر مئیر کراچی کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے جیل سے جاری وسیم اختر کے اعترافی بیان کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا۔

وسیم اختر کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ بارہ مئی میں صرف وسیم اختر کو کیوں گرفتار کیا گیا؟ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس وقت کے صدر، وزیراعظم اور وزیر داخلہ کے خلاف بھی کیس چلایا جائے۔

مزید پڑھیں: سانحہ 12 مئی کیس: عدالت کی وسیم اختر کو جیل سے کام کرنے کی ہدایت

 اہلیہ مئیر کراچی نے دعوی کیا کہ وسیم اختر پر مئیر بننے سے پہلے کوئی کیس نہیں تھا اور ان پر قائم تیس میں سے وہ تئیس مقدمات میں ضمانت بھی کر اچکے ہیں۔

مزید پڑھیں: وسیم اختر کے لیے مشکلات کم ہوتی نظر نہیں آتیں

 نائلہ وسیم نے کہا کہ وسیم اختر کو کام سے روک کر کراچی کو یتیم کیا جا رہا ہے۔ وسیم اختر کی اہلیہ اور ان کے اہل خانہ نے مطالبہ کیا کہ وسیم اختر کے ٹرائل کو منصفانہ طور پر چلا کر جلد از جلد مئیر کراچی کو رہا کرکے کراچی کی خدمت کرنے کا موقع دیا جائے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں