سانحہ بارہ مئی کے ایک اور کیس میں میئر کراچی پر فردِ جرم عائد -
The news is by your side.

Advertisement

سانحہ بارہ مئی کے ایک اور کیس میں میئر کراچی پر فردِ جرم عائد

کراچی: سانحہ 12 مئی کے ایک اور کیس میں میئر کراچی وسیم اختر پر فرد جرم عائد کر دی گئی، انسدادِ دہشت گردی کی عدالت کی کارروائی سے بارہ مئی کیس میں اہم پیش رفت ہو گئی۔

تفصیلات کے مطابق انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں میئر کراچی وسیم اختر سمیت 21 ملزمان پر سانحہ بارہ مئی کیس میں فردِ جرم عائد کی گئی۔

ملزمان کے صحتِ جرم سے انکار پر عدالت نے کیس کے گواہان کو 27 اکتوبر کو طلب کر لیا۔

وسیم اختر سمیت اکیس ملزمان اے ٹی سی میں پیش ہوئے، ملزمان نے دورانِ سماعت صحتِ جرم سے انکار کر دیا، عدالت نے کیس کے گواہان کو 27 اکتوبر کو طلب کر لیا۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ سانحہ بارہ مئی کی از سرِ نو تحقیقات کے لیے سندھ ہائی کورٹ نے جے آئی ٹی اور انکوائری ٹربیونل تشکیل دینے کا حکم دیا تھا، تحقیقات کی مانیٹرنگ کے لیے چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے سینئر جج مقرر کرنے کی سفارش بھی کی گئی تھی۔

سندھ حکومت کی جانب سے کمیشن بنانے کی مخالفت کی گئی اور مؤقف اختیار کیا گیا کہ تمام متاثرین کو معاوضے کی ادائیگی بھی کی جا چکی ہے۔


یہ بھی پڑھیں:  سانحہ بارہ مئی: ازسرِنو تحقیقات کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دینے کا حکم


یاد رہے کہ شہرِ قائد میں رونما ہونے والے اپنی نوعیت کے، انتہائی سنگ دلی پر مبنی سانحہ 12 مئی کو 11 سال گزر چکے ہیں، تا حال اس سانحے کا حتمی فیصلہ نہیں کیا جا سکا۔

12 مئی 2007 کو سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری کے کراچی پہنچتے ہی شہر میں قتل و غارت گری کا طوفان آ گیا اور شہر لہو لہان کر دیا گیا، خوں ریز واقعات میں 50 سے زائد افراد کو زندگیوں سے محروم کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں