The news is by your side.

Advertisement

ایم ڈی واٹر بورڈ مستعفی، غیر قانونی ہائیڈرنٹس کھولنے کیلئے دبائو تھا

ادارہ فراہمی آب و نکاسی آب کے مینیجنگ ڈائریکٹر مصباح الدین فرید نے طبعیت کی ناسازی کی بنا پرآج استعفیٰ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے ایم ڈی مصباح الدین فرید نے آج اپنا استعفیٰ چیف سیکرٹری سندھ اور سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کو بھجوادیا ہے،جس میں انہوں نےموقف اختیار کیا ہے کہ طبیعت کی ناسازی کے باعث وہ فرائض انجام نہیں دے پارہے ،اس لیے اُن کا استعفیٰ فوری طور پر قبول کیا جائے۔

ذرائع کے مطابق مصباح فرید کا کہنا تھا کہ طبعیت کی ناسازی کے باعث بہتر کارکردگی نہیں دکھا پا رہے تھے،رمضان کے مہینے کا آغاز ہے پانی کی شدت قلت کے باعث شہریوں کو پانی فراہم نہیں کر پارہا ہوں، جس پر شرمندہ ہوں،اسی لیے استعفیٰ دیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم ڈی واٹر بورڈ کا استعفیٰ منظور نہیں کیا گیا، ان پر غیر قانونی ہائیڈرنٹس کھولنے کے لیے شدید دبائو تھا جس کے باعث وہ ذہنی تناؤکا شکار تھے تاہم انہوں نے پھر بھی غیر قانونی ہائیڈرنٹس کھولنے سے انکار کردیا تھا اور مستعفی ہوگئے۔

کل متحدہ قومی موومنٹ کے پانی کے بحران پر وزیر اعلیٰ ہاؤس پر مظاہرہ کیا گیا تھا، مظاہرین سے مذاکرات کے لیے مشیر وزیراعلیٰ وقار مہدی اور صوبائی وزیر ناصر شاہ کے ہمراہ مصباح فرید بھی تھے۔

یا درہے مصباح فرید اس سے قبل سال 2011 سے 2013 تک پہلی مرتبہ ایم ڈی بنے،تاہم جونیئر افسر ہونے کے باعث عدالت نے انہیں اپنے پرانے عہدے پر بھیج دیا تھا،جس کے بعد قطب الدین شیخ،ہاشم رضا زیدی اور عمران آصف ایم ڈی واٹر بورڈ بنے تھے۔

تاہم واٹر بورڈ کے حالات جوں کے توں رہے،جس کے بعد سندھ حکومت نے دوبارہ ستمبر 2015 سے مصباح فرید کی بطور ایم ڈی خدمات حاصل کیں، جس کے بعد سے انہوں نے ہائیڈرینٹ مافیا، ٹھیکے دار مافیا اور گھوسٹ ملازمین کے خلاف مثبت اقدامات کیے تھے۔

واضح رہے کہ واٹر بورڈ کراچی شہری حکومت کا واحد ادارہ جہاں ملازمین کی تنخواہ ہر باقاعدگی سے اور بروقت آ جاتیں ہیں، اس امر کا سہرا بھی مصباح فرید کے سر جاتا ہے، وہ پہلے ایم ڈی تھے جنہوں نے واٹر بورڈ کے آئین میں ترمیم کی کہ مہینے کے آغاز میں پہلے تنخواہیں جاری کی جائیں گی اُ س کے بعد دیگر اخراجات کیے جائیں گے،یہی وجہ ہے کہ مصباح فرید اپنے محکمہ میں اچھی ساکھ رکھتے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں