The news is by your side.

Advertisement

ملک کے مختلف شہروں میں میڈیا ہاؤسزپرحملے، وزیراعظم کی مذمت

کراچی / لاہور/ حیدرآباد : ملک کے مختلف شہروں میں مذہبی جماعتوں کے کارکنوں نے اپنے مطالبات کے حق میں ریلی نکالی، میڈیا ہاؤسز پر حملے، مشتعل افراد پولیس اور صحافیوں پر بھی چڑھ دوڑے۔

مظاہرین نے دکانیں بند اوراورٹریفک کو معطل کردیا، سرکاری ٹرک سمیت ٹی وی چینلز کی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچایا۔وزیراعظم نواز شریف، وفاقی وزیراطلاعات پرویز رشید، وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے میڈ یا پر حملوں کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں مشتعل افراد نے ریلی کا آغاز داتا دربار سے کیا، شرکاء نے لوئرمال تھانے کے باہر کھڑے پولیس اہلکاروں پر دھاوا بول دیا، ڈنڈا بردار مظاہرین نے زبردستی دکانیں بھی بند کرا دیں۔

انارکلی روڈ پرنیوٹی وی کی وین پرمشتعل افراد نےحملہ کرکےشیشےتوڑدیئے، ریلی کے شرکاء ناصر باغ، پرانی انارکلی اور ہال روڈ سے ہوتے ہوئے پنجاب اسمبلی کے باہر پہنچے اورمطالبات کے حق میں شدید نعرے بازی کی۔

ریلی کے دوران لاہور پولیس نے خاموش تماشائی کا کردار ادا کیا۔ دوسری جانب کراچی کے علاقے صدرالیکٹرانک مارکیٹ میں مشتعل افراد نے توڑپھوڑ کرکے زبردستی دکانیں بند کرادیں۔ گرومندر کے قریب آج ٹی وی کے دروازے پر مشتعل مظاہرین نے دھاوا بول دیا۔

علاوہ ازیں حیدرآباد پریس کلب پر مشتعل مظاہرین نے پتھراؤ کرکے صحافیوں کو پریس کلب میں محصور کردیا، قیمتی سامان بھی جلا دیا جبکہ وہاں موجود صحافیو ں کو بھاگ کرجان بچانا پڑی۔

مظاہرین نے صحافیوں سے کیمرے چھین کر توڑ دیئے۔ وزیراعظم نے صحافیوں اور میڈ یا ہاوسز پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت میڈ یا کی آزادی پر یقین رکھتی ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کراچی اور لاہور میں آج ٹی وی کے دفاتر پر حملوں کی مذمت کی ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ میڈ یا ہاوسز پر حملہ آزادی اظہار کو سلب کرنے کے مترادف ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے میڈیا ہاوٴسز میں توڑ پھوڑکا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ کو ہدایت کی ہے کہ میڈیا ہاوٴسزکی سیکیورٹی کوہر قیمت پر یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کے جان و مال کے تحفظ کی ہر ممکن کوشش کی جائے۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں