The news is by your side.

Advertisement

لاہور: محمود الرشید کے بیٹے پر تشدد کرنے والے3پولیس اہلکار گرفتار، مقدمہ درج

لاہور : پنجاب کے وزیر ہاؤسنگ محمود الرشید کے بیٹے کیخلاف جھوٹا مقدمہ درج کرانے والے تین پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا، انکوائری رپورٹ نے تینوں اہلکاروں کو قصور وار ثابت کردیا۔

تفصیلات کے مطابقگزشتہ ماہ محمودالرشید کے بیٹے میاں حسن کیخلاف پولیس اہلکاروں کی جانب سے اہلکاروں کو اغوا کرنے اور دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج کرایا گیا تھا، جس کے بعد واقعے کی تحقیقات کیلئے انکوائری کمیٹی قائم کی گئی۔

انکوائری میں تینوں اہلکار قصوروار ثابت ہوگئے، غالب مارکیٹ تھانہ پولیس نے ملزمان کانسٹیبل ندیم اقبال، عثمان مشتاق اور عثمان سعید کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا، تینوں ملزمان تھانہ غالب مارکیٹ کے محافظ اسکواڈ میں تعینات تھے۔

انکوائری رپورٹ کے مطابق ملزمان پولیس اہلکار دوران ڈیوٹی مختلف جوڑوں کی ویڈیوز بنا کر انہیں بلیک میل کرتے تھے، اس واقعے میں بھی پچاس ہزار روپے بطور رشوت مانگنے پر شہری سے جھگڑا ہوا تھا، ملزمان کے فون سے مختلف جوڑوں کی ویڈیوز بھی ملی ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے قبل صوبائی وزیرِ ہاؤسنگ میاں محمود الرشید نے پولیس کے خلاف اپنے بیٹے میاں حسن کے اغوا کا مقدمہ درج کرایا تھا۔

مزید پڑھیں: پی ٹی آئی رہنما محمود الرشید کے بیٹے کے خلاف پولیس اہل کاروں کے اغوا کا مقدمہ درج

ان کا کہنا تھا کہ بیٹے کے خلاف مقدمہ من گھڑت ہے، ان کا کہنا تھا کہ ٹی پارٹی میں جانے والے بیٹے کے دوست علی پر پولیس اہل کاروں نے تشدد کیا تھا۔

مزید پڑھیں: میاں محمود الرشید نے پولیس کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کرا دیا

وزیرِ ہاؤ سنگ پنجاب نے کہا کہ پولیس تشدد کے بعد بیٹا جائے وقوعہ پر پہنچا، پولیس کے معافی مانگنے پر حسن تھانے نہیں گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں