The news is by your side.

Advertisement

کراچی، تجاوزات کے خلاف آپریشن معطل، عوامی ردعمل پر پولیس پسپا

کراچی: شہر قائد کے علاقے محمود آباد میں ہونے والے انسداد تجاوزات آپریشن کو عوام کے شدید ردعمل اور احتجاج کے بعد معطل کردیا گیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق کراچی میونسپل کارپوریشن کی ٹیم محمودآباد کے علاقے منظور کالونی میں واقع نالے پر قائم تجاوزات کے خلاف آپریشن کرنے پہنچی تو انہیں عوام کی جانب سے سخت مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا۔

مشتعل افراد اور علاقہ مکینوں نے کراچی میونسپل کارپوریشن کے عملے پر پتھراؤ کیا جس کے نتیجے میں دو اہلکار زخمی ہوئے جبکہ انہوں نے مشینری کو قبضے میں لیا اور شیشے توڑ دیے۔

پولیس نے مشتعل افراد کو گرفتار کرنا شروع کیا تو عوام نے اہلکاروں کو بھی نہ بخشا۔ مظاہرین کی جانب سے کیے جانے والے پتھراؤ میں تھانہ بلوچ کالونی کے ایس ایچ او زبیر نواز بھی معمولی زخمی ہوئے۔ صورت حال کو دیکھتے ہوئے مزید نفری کو طلب کیا گیا جبکہ وقوعہ پر موجود پولیس اہلکار منظور کالونی فائر اسٹیشن میں پناہ لینے پر مجبور ہوئے۔

پولیس اہلکاروں اور کے ایم سی عملے نے فائر اسٹیشن میں داخل ہونے کے بعد دروازے بند کیے  جس کے بعد وہاں عوام بڑی تعداد میں جمع ہوئے اور انسداد تجاوزات آپریشن اور کے ایم سی کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی۔

مشتعل افراد نے منظور کالونی فائرس اسٹیشن پر بھی پتھراؤ کیا جس کے بعد دیکھتے ہی دیکھتے یہ علاقہ میدانِ جنگ بن گیا۔

بعد ازاں پولیس حکام نے مظاہرین سے مذاکرات کیے جو کامیاب ہوئے جس کے بعد انسداد تجاوزات آپریشن کو عارضی طور پر معطل کردیا گیا۔

ایس پی نے بتایا کہ مشتعل مظاہر منظور کالونی فائرس اسٹیشن کا مرکزی دروازہ توڑ کر اندر داخل ہوگئے تھے اور انہوں نے قبضہ کرلیا تھا۔ کشیدگی کے باعث کورنگی ایکسپریس وے پر ٹریفک کو بند بھی کیا گیا تھا جسے کامیاب مذاکرات کے بعد کھول دیا گیا۔

پولیس کے مطابق مظاہرین نے مذاکرات کے بعد کراچی میونسپل کارپوریشن کے ٹرک اور مشینری پولیس کے حوالے کردی جبکہ فائر اسٹیشن سے قبضہ بھی ختم کردیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں