The news is by your side.

Advertisement

وائٹ ہاؤس چھوڑ کر گھر جانے سے متعلق میلانیا ٹرمپ کیا کہتی ہیں؟

واشنگٹن: جہاں ایک طرف ڈونلڈ ٹرمپ وائٹ ہاؤس میں رہنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہے ہیں وہاں ان کی اہلیہ خاتون اوّل میلانیا نے کہا ہے کہ وہ بس گھر جانا چاہتی ہیں۔

امریکی میڈیا کے مطابق خاتون اوّل مزید چار سال تک ملک کی باگیں تھامے رکھنے کے سلسلے میں صدر ٹرمپ کے منصوبے کے ساتھ متفق نہیں ہیں، ایک سفیر نے کہا ہے کہ امریکی خاتون اوّل میلانیا ٹرمپ گھر جانا چاہتی ہیں۔

میلانیا کا کہنا ہے کہ 2024 تک کی دوسری صدارتی مدت بھی ہو سکتا ہے کہ اچھا نہ گزرے، امریکی میڈیا کے ذرایع کا کہنا ہے کہ میلانیا ٹرمپ نے اپنی ساری توجہ واشنگٹن سے اپنی رخصتی پر مرکوز کر رکھی ہے۔

میڈیا کے مطابق صدر ٹرمپ وائٹ ہاؤس میں اپنے قیام کو طول دینے کے لیے کوئی راستہ ڈھونڈ رہے ہیں اور ایسے میں خاتون اوّل یہ طے کر رہی ہیں کہ اسٹوریج میں کیا رکھنا ہے، اور فلوریڈا کے پام بیچ پر جانے کے لیے کیا کیا ساتھ لے جانا چاہیے۔

دوسری طرف میلانیا ٹرمپ کے چیف آف اسٹاف اسٹیفنی گریشم کا کہنا ہے کہ خاتون اوّل کی مصروفیات بدستور جاری ہیں، ان کی توجہ فرسٹ لیڈی کا کردار ادا کرنے پر مرکوز ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ میلانیا نے پیر کو وائٹ ہاؤس میں ٹینس پویلین کی تکمیل کا اعلان کر کے وائٹ ہاؤس میں اپنے رہنے کی چاہت کا اظہار کیا، اسی طرح حال ہی میں انھوں نے نئے سرے سے تزئین و آرائش سے گزرنے والے روز گارڈن میں ایک نئے فن پارے کی نقاب کشائی کی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں