The news is by your side.

Advertisement

جنسی ہراساں کرنے کا الزام، ساجد خان پر ایک سال کی پابندی

ممبئی: بھارتی فلم اینڈ ٹیلی ویژن ایسوسی ایشن نے بالی ووڈ ہدایت کار ساجد خان پر ایک سال کی پابندی عائد کردی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی فلم اینڈ ٹیلی ویژن ڈائریکٹر ایسوسی ایشن (آئی ایف ٹی ڈی اے) نے جنسی ہراسانی کے الزامات عائد ہونے کے بعد ساجد خان پر پابندی عائد کی۔

ہدایت کار پر دو ماہ قبل اداکارہ سلونی چوپڑا ، صحافی کرشمپ اوپاڈہے اور ریچل وائٹ نے جنسی ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا تھا جس کے بعد ساجد خان نے کوئی صفائی بھی پیش نہیں کی۔

بعد ازاں نامور بالی ووڈ اداکارہ بپاشا باسو نے بھی ساجد خان پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ خواتین کے ساتھ مذاق کرنے کے دوران تمام حدیں پار کردیتے ہیں جبکہ دیا مرزا نے بھی الزامات کی تصدیق کی تھی۔

جنسی ہراسانی کے الزامات، ساجد خان نے بطور ہدایت کار استعفیٰ دے دیا

بالی ووڈ اداکاراؤں کی طرف سے الزامات عائد ہونے کے بعد آئی ایف ٹی ڈی اے نے ایک کمیٹی تشکیل دی تھی جس نے الزامات کی تحقیقات کا آغاز کیا اور نومبر کے اختتام پر ساجد خان کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے وضاحب طلب کی تھی۔

ہدایت کار کو بھیجے جانے والے نوٹس میں کہا گیا تھا کہ ’آپ کے رویے کی وجہ سے فلم انڈسٹری اور ایسوسی ایشن کی پوری دنیا میں بدنامی ہورہی ہے، اگر آپ نے کچھ نہیں کیا تو بے گناہی ثابت کریں جس کے بعد الزامات لگانے والوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی‘۔

ساجد خان نے اپنے اوپر عائد ہونے والے الزامات کی تردید کی تھی مگر آئی ایف ٹی ڈی اے کو وہ کوئی ثبوت پیش نہیں کر پائے، ہدایت کار نے دو بار مہلت طلب کی اور جب وہ الزامات کو جھوٹا ثابت نہ کرپائے تو آئی ایف ٹی ڈی اے نے اُن پر ایک سال کی پابندی عائد کردی۔

یہ بھی پڑھیں: جنسی ہراساں کرنے والوں‌ کا بائیکاٹ‌ کیا جائے، عامر خان کا مشورہ

یاد رہے کہ دو ماہ قبل ساجد خان پر جنسی ہراساں کرنے کے الزامات عائد کیے گئے تھے جس کے بعد انہوں نے اپنی نئی آنے والی فلم ’ہاؤس فل 4‘ سے علیحدگی اختیار کرلی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں