The news is by your side.

Advertisement

مذاکرات سے واپسی پر مفتاح اسماعیل آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی کے لیے پُر عزم

اسلام آباد: دوحہ مذاکرات سے واپسی پر وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی کے لیے پُر عزم ہیں۔

تفصیلات کے مطابق دوحہ، قطر میں آئی ایم ایف وفد کے ساتھ سات روزہ مذاکرات ختم ہونے پر وزیر خزانہ پاکستان نے ٹویٹس میں مذاکرات کے حوالے سے چیدہ چیدہ نکات کی وضاحت کی۔

مفتاح اسماعیل نے لکھا کہ میں آئی ایم ایف سے مذاکرات کے بعد دوحہ سے واپس آ گیا ہوں، ہمارے وفد کی آئی ایم ایف کے ساتھ بہت مفید اور تعمیری بات چیت ہوئی ہے۔

انھوں نے لکھا کہ ہم نے مالی سال 2023 کے اہداف پر تبادلہ خیال کیا، اور مالی سال 2022 میں دی گئی ایندھن سبسڈی، بڑھتے افراط زر، اور گرتے غیر ملکی زر مبادلہ کے ذخائر پر مذاکرات ہوئے۔

وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے پیش نظر مالیاتی پالیسی مستحکم کرنے کی ضرورت ہوگی، اور حکومت مالی سال 23 میں بجٹ خسارہ کم کرنے کے لیے پُر عزم ہے۔

گزشتہ حکومت نے معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سبسڈی دی: آئی ایم ایف مشن چیف

انھوں نے کہا ہم آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی اور ملک پائیدار ترقی کی راہ پر ڈالنے کے لیے پُر عزم ہیں، آئی ایم ایف ٹیم نے ایندھن اور بجلی کی سبسڈی واپس لینے کی اہمیت پر زور دیا، یہ سبسڈی گزشتہ حکومت نے اپنے معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دی تھی۔

مفتاح اسماعیل نے ٹویٹ میں لکھا ‘ہم نے مالی سال 23 کے اہداف پر تبادلہ خیال کیا، جہاں، بلند افراط زر، گرتے ہوئے غیر ملکی زر مبادلہ کے ذخائر اور کرنٹ اکاؤنٹ کے بڑے خسارے کی روشنی میں، ہمیں ایک سخت مالیاتی پالیسی اور اپنی مالی پوزیشن کو مستحکم کرنے کی ضرورت ہوگی۔’

Comments

یہ بھی پڑھیں