پنجاب کے کالجز میں طالبات کے لیے حجاب لازمی قرار دینے کی سفارش
The news is by your side.

Advertisement

پنجاب کالجز میں طالبات کے لیے حجاب لازمی قرار دینے کی سفارش

لاہور: محکمہ ہائر ایجوکیشن نے پنجاب بھر کے کالجوں میں طالبات کے لیے حجاب لازم کرنے کی سفارش کردی، ہائر ایجوکیشن کے وزیر نےکالجز میں زیرتعلیم حجاب پہننے والی طالبات کی حوصلہ افزائی کے لیے 5 فیصد اضافی حاضری کی سہولت دینے کی سفارش بھی کی۔

وزیر ہائرایجوکیشن کے مطابق 65 فیصد سے کم حاضری پر حجاب پہننے والی طالبات کو 5 فیصد اضافی حاضری دی جائے گی کیونکہ اگر پینسٹھ فیصد حاضری نہ ہو تو طالبات کو جامعات میں داخلہ نہیں دیا جاتا۔

انہوں نے کہا کہ لاہور بورڈ کے تحت چلنے والے تمام کالجز کو فیصلے سے متعلق ہدایات جاری کردی گئیں ہیں اور انہیں پابند کیا گیا ہے کہ وہ حجاب کرنے والی خواتین کو 5 فیصد اضافی حاضری دیں۔

بعد ازاں پنجاب حکومت نے ترجمان نے خبر کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ ’’حجاب کی شرط وزیر کی اپنی سوچ ہے اس ضمن میں پنجاب حکومت کی کوئی پالیسی زیر غور نہیں جبکہ وزیر قانون رانا ثناء اللہ نے کہا کہ ’’وزیر کی بات کو غلط نشر کیا گیا یہ اُن کی اپنی سوچ ضرور ہے مگر حکومتی سطح پر اس قسم کی کوئی بات قابلِ غور نہیں ہے‘‘۔

دوسری جانب آصفہ بھٹو نے پنجاب میں حجاب پہننے کے فیصلے پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ ’’حجاب پہننے پر لڑکیوں کو 5 نمبر دیے گئے تو لڑکوں اور دیگر مذاہب کی خواتین کا کیا ہوگا اور حجاب پہننے کا نمبرز اور گریڈ سے کوئی تعلیم نہیں ہے‘‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں