The news is by your side.

Advertisement

زکوٰۃ کا نصاب 39 ہزار 198 روپے مقرر

اسلام آباد: وزارت مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی کی جانب سے رواں سال کے لیے زکوٰۃ کا نصاب 39 ہزار 198 روپے مقرر کر دیا گیا ہے۔

وزارت مذہبی امور کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق اگر کسی کے بینک اکاؤنٹ میں زکوٰۃ اور عشر کے قانون کے رو سے یکم رمضان المبارک تک 39 ہزار 198 روپے سے کم رقم موجود ہوگی تو اس پر زکوٰۃ کی کٹوتی نہیں کی جائے گی۔

سرکاری نوٹیفیکیشن کے مطابق رمضان المبارک کے پہلے دن کو ’کٹوتی کا دن‘ قرار دیا گیا ہے جو کہ 17 یا 18 مئی (چاند نظر آنے سے مشروط) کو پڑ سکتا ہے۔

یکم رمضان کو سیونگ بینک اکاؤنٹس، پرافٹ اور لاس شیئرنگ اکاؤنٹس اور اسی طرح کے دیگر اکاؤنٹس جو کریڈٹ بیلنس پر مشتمل ہیں، سے زکوٰۃ کی کٹوتی عمل میں لائی جائے گی۔

وزارت مذہبی امور نے زکوٰۃ جمع کرنے والی کنٹرولنگ ایجنسیز سے کہا ہے کہ نوٹیفکیشن کے مطابق زکوٰۃ کی کٹوتی کی جائے۔

مئی کا پہلا عشرہ ، ماہ رمضان سے قبل مہنگائی کی شرح میں اضافہ


اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے تمام بینکوں اور مالیاتی اداروں کے صدور اور چیف ایگزیکٹوز کو سرکلر جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزارت مذہبی امور سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے عین مطابق زکوٰۃ کی کٹوتی کی جائے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق پچھلے سال کے مقابلے میں اس سال زکوٰۃ کے نصاب میں 793 روپے اضافہ کیا گیا ہے، پچھلے سال زکٰوۃ کا نصاب 38 ہزار 405 روپے تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں