The news is by your side.

Advertisement

ایف اے ٹی ایف ممبران نے پاکستان کی پیشرفت کو تسلیم کرلیا

اسلام آباد : وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف ممبران نے پاکستان کی پیشرفت کو تسلیم کیا اور منی لانڈرنگ ، دہشت گردی میں مالی معاونت کے سدباب کے عزم کو سراہا۔

تفصیلات کے مطابق وزارت خزانہ کی جانب سے ایف اےٹی ایف اجلاس کا اعلامیہ جاری کیا گیا ہے ، جس میں کہا ہے کہ ایف اے ٹی ایف نے دونوں ایکشن پلانز میں پیشرفت کاجائزہ لیا۔

اعلامیے میں کہا گیا ایف اے ٹی ایف ممبران نے پاکستان کی پیشرفت کو تسلیم کیا اور منی لانڈرنگ ، دہشت گردی میں مالی معاونت کے سدباب کے عزم کو سراہا۔

وزارت خزانہ کا کہنا تھا کہ پاکستان نے اپنا کیس مؤثر طریقے سے پیش کیا ، جس میں پاکستان نے ایکشن پلان کی تکمیل کیلئے سیاسی عزم کا اعادہ کیا۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ 2018ایکشن پلان کے 27میں سے 26 آئٹمز مکمل کیےجاچکے ہیں، اجلاس میں تسلیم کیا گیا کہ آخری آئٹم پربھی پاکستان نے اہم پیشرفت کی۔

وزارت خزانہ کی جانب سے کہا گیا کہ ایف اے ٹی ایف نے آخری آئٹم کی تکمیل کیلئے پاکستان کی حوصلہ افزائی کی ، پاکستان نے 2021کے ایکشن پلان کے تحت تیز عملدرآمد کیا۔

اعلامیے کے بعد 2021 کے ایکشن پلان کے بھی 7میں سے 6 آئمز مکمل کیےگئے، حکومت پاکستان بقیہ 2 آئٹمز کی تکمیل کے عزم کا اعادہ کرتی ہے۔

گذشتہ روز منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کی روک تھام کے عالمی ادارے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف) نے ایک بار پھر پاکستان کو گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔

فیٹف اجلاس میں پاکستان کو جون تک اہداف حاصل کرنے کا وقت دیا گیا ہے، ایف اے ٹی ایف کے مطابق 27 میں سے 26 نکات پر پاکستان نے کام کر لیا ہے، آئندہ پاکستان کی کارکردگی کا جائزہ جون میں لیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں