The news is by your side.

Advertisement

مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، رنجیت سنگھ کا مودی سرکار کے خلاف اہم اعلان

اسلام آباد: ورلڈ سکھ پارلیمنٹ کے ممبر رنجیت سنگھ نے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں سمیت دیگر اقلیتوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، اقوام متحدہ میں مودی سرکار کے خلاف درخواست جمع کرائیں گے۔

ان خیالات کا اظہار رنجیت سنگھ نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام دی رپورٹرز میں گفتگو کرتے ہوئے کیا، انھوں نے کہا کہ مودی سرکار ایسے قوانین بناتی ہے جس سے اقلیتوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے، مسلمانوں کے ساتھ ساتھ دیگر اقلیتوں کو بھی نشانہ بنایا جا رہا ہے، ہم اقوام متحدہ میں مودی سرکار کے خلاف درخواست جمع کرائیں گے۔

انھوں نے کہا مودی سرکار کسانوں کے احتجاج سے توجہ ہٹانا چاہتی ہے، مقبوضہ کشمیر کے عوام کی طرح سکھ بھی تحریک لے کر چل رہے ہیں، دنیا بھر میں مودی سرکار کے خلاف سکھ سراپا احتجاج ہیں۔

رنجیت سنگھ کا کہنا تھا مقبوضہ کشمیر میں صورت حال بہت خراب ہے، کسان بھی اپنے جائز مطالبات کے لیے احتجاج کر رہے ہیں، لیکن جائز مطالبات کے لیے احتجاج کرنے والوں پر تشدد کیا گیا، کسان پہلے ہی غریبی میں رہ رہے ہیں اور خود کشیاں کر رہے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا مودی نے اپنے لوگوں کو نوازنے کے لیے پورا قانون تبدیل کیا، وہ کسانوں سے متعلق نیا نظام لانا چاہتا ہے، سرکار کسانوں کے خلاف طاقت کا استعمال کر رہی ہے، اور کسانوں کو ان کا جائز حق نہیں دیا جا رہا۔

رنجیت سنگھ کا کہنا تھا کہ مودی کو کسانوں نے چیلنج کیا ہے اسے سمجھ نہیں آ رہا کہاں جائے، بھارت میں صورت حال انتہائی خراب ہے، 5 لاکھ کسانوں نے اپنے مطالبات مودی سرکار کو پیش کیے ہیں، کسانوں کے کوئی سیاسی مطالبات نہیں ہیں، لیکن کسانوں کی تحریک یا احتجاج کو سیاست سے جوڑا جا رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں