The news is by your side.

پی آئی اے افسرسے بدتمیزی، چیف جسٹس نے وزیرسیاحت جی بی فداحسین کاتحریری معافی نامہ منظور کرلیا

اسلام آباد: ایئر پورٹ پرپی آئی اےافسرسےبدتمیزی کے واقعے پر سپریم کورٹ نے وزیرسیاحت جی بی فداحسین کاتحریری معافی نامہ منظور کرلیا، چیف جسٹس نے وزیرسیاحت گلگت کوآئندہ محتاط رہنےکی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ معافی دینے کامقصدگلگت بلتستان کےلوگوں سےمحبت ہے، جس پر فدا حسین نے کہا پی آئی اے عملے سےاپنےرویے پر پہلے ہی معافی مانگ چکاہوں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں اسلام آباد ایئرپورٹ پر پی آئی اے افسر سے بد تمیزی پر ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی ، وزیرسیاحت گلگت بلتستان فدا حسین سپریم کورٹ میں پیش ہوئے، چیف جسٹس نے آئی جی اسلام آباد کو طلب کرلیا۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کیا آپ وہ وزیر ہیں جس نےدھکےدیے؟ دکھائیں ویڈیو کیسے انہوں نے دھکے دیے، آپ نے جب دھکے دیے کیا اس وقت ہوش میں تھے؟ وزیرسیاحت گلگت بلتستان نے جواب دیا میں نے دھکا ضرور دیا لیکن اس کی وجہ تھی۔

جسٹس ثاقب نثار نے مزید کہا آپ نے کیسے سرکاری کام میں مداخلت کی؟جسٹس اعجاز کلا کہنا تھا کہ پرواز میں تاخیر پر کیا ایسے ردعمل دکھاتے ہیں؟

کیا آپ بدمعاش ہیں، شرمندگی کا اظہارکریں جن کو دھکا دیا، ان سے معافی بھی مانگیں

چیف جسٹس کا وزیر سیاحت سے مکالمہ

سپریم کورٹ کے طلب کرنے پر آئی جی اسلام آباد پیش ہوئے ، چیف جسٹس نے کہا جب سے آپ آئی جی بنے ہیں عدالت میں پیش کیوں نہیں ہوتے، اپنا غرور اور تکبرگھر چھوڑ کر آیا کریں، یہ عدالت ہے، ایئر پورٹ پر بدتمیزی ہوئی اس پر آپ نے کیا ایکشن لیا۔

آئی جی اسلام آباد نے بتایا یہ واقعہ ہماری حدودمیں نہیں پنجاب کی حدود میں ہوا، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہاں ہیں پنجاب کے ایڈووکیٹ جنرل۔

وزیر کی ایئر پورٹ پر بدتمیزی کی ویڈیو کمرہ عدالت میں چلائی گئی،جس پر چیف جسٹس نے وزیرسیاحت سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا وزیر صاحب کیا آپ بد معاش ہیں، آپ کودھکے دیتے ہوئے شرم نہیں آئی، شرمندگی کا اظہارکریں جن کو دھکا دیا، ان سے معافی بھی مانگیں۔

وزیر سیاحت نے جواب دیا اپنے عمل پر شرمندہ ہوں،غلطی انسان سے ہوتی ہے،عدالت معاف کرے، یہ محض آدھے گھنٹے کا قصہ نہیں صبح 4بجے سے انتظار کررہا تھا ، وزیر ہو کر بھی بے بسی کا عالم تھا۔

چیف جسٹس نے وزیرسیاحت گلگت کے خلاف مقدمہ درج کرنےکاحکم دیتے ہوئے کہا کوئی معافی نہیں دیں گے، عدالت اس معاملے کو ازخود نوٹس کے طور پر سنے گی، پنجاب حکومت وزیرموصوف کے خلاف پرچہ درج کرے، آپ تحریری معافی نامہ جمع کرائیں اور ایڈووکیٹ جنرل پنجاب اس معاملے کو دیکھیں۔

پریم کورٹ میں وزیرسیاحت گلگت بلتستان فداحسی نے تحریری معافی نامہ جمع کرایا ، چیف جسٹس نے فدا حسین کاتحریری معافی نامہ منظور کرلیا، چیف جسٹس نے وزیرسیاحت گلگت کو آئندہ محتاط رہنےکی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ معافی دینے کا مقصد گلگت بلتستان کے لوگوں سےمحبت ہے، جس پر فدا حسین نے کہا پی آئی اے عملے سےاپنےرویے پر پہلے ہی معافی مانگ چکاہوں۔

مزید پڑھیں : چیف جسٹس نے گلگت بلتستان کے وزیر کی اسلام آباد ایئرپورٹ پر بدتمیزی کا نوٹس لے لیا

یاد رہے 16 نومبر کو پرواز میں تاخیر پرمسلم لیگ ن کے وزیر فدا خان کی جانب سے ایئرپورٹ حکام کو دھکے دینے کی ویڈیو میڈیا پر نشر پر ہونے کے بعد چیف جسٹس نے ازخود نوٹس لیتے ہوئے گلگت بلتستان کے وزیر فدا خان اور ایئرپورٹ حکام کو طلب کرلیا تھا۔

واضح رہے کہ موسم کی خرابی کے باعث فلائٹ تاخیر کا شکار ہونے کی وجہ سے اسلام آباد ایئرپورٹ پر گلگت بلتستان کے وزیر آپے سے باہر ہوگئے تھے، وزیر سیاحت فدا خان اور وزیر قانون اورنگزیب خان قانون کو ہی بھول گئے تھے۔

صوبائی وزیر فدا خان نے غصے میں آکر پی آئی اے افسر کو دھکے دیئے، جس سے وہ گرتے گرتے بچے۔ مذکورہ وزیروں نے اے ایس ایف اہلکاروں سے بدتمیزی کی اور سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دیں، غصے میں بپھرے وزیروں نے احتجاجاً ائیرپورٹ پر اپنی جیکٹیں بھی جلا ڈالیں، دونوں وزراء کا تعلق ن لیگ سے ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں