The news is by your side.

Advertisement

سہولیات کا فقدان، ایتھلیٹس پریشان، سندھ گیمز مذاق بن گئے

کراچی: سہولیات کے فقدان اور ناقص انتظامات کی وجہ سے سندھ گیمز مذاق بن گئے، ایونٹ میں‌ ایتھلیٹس شدید پریشان نظر آئے.

تفصیلات کے مطابق سندھ گیمز کے ناقص انتظامات کے باعث کھلاڑی شدید پریشان ہیں، نہ تو صفائی ستھرائی ہے، نہ ہی پینے کا پانی، شدید گرمی میں‌ پریکٹس کرنے والے ایتھلیٹس کے لیے پھٹے ہوئے گدے رکھے گئے ہیں.

یاد رہے کہ سندھ گیمز چھ سال بعد منعقد ہورہے ہیں، جن کے لیے کروڑوں کا بجٹ مختص کیا گیا ہے، مگر انتظامات میں‌ بڑے پیمانے پر گھپلے کا پول ابتدا ہی میں‌ کھل گیا.

بدترین انتظامات نے حکومتی دعووں کا عقدہ کھول دیا، ہائی جمپ کے لئے رکھے گئے گدے ایتھلیٹس کے لیے خطرہ بن گئے. ہائی جمپ کے دوران ایک کھلاڑی کا سر ان ہی گدوں کی وجہ سے زمین سے جا ٹکرایا.

سندھ گیمز میں مشعل روشن کرنے کے لئے گیس سلینڈر کا استعمال کیا گیا، میڈیکل کی سہولیات کا بھی فقدان ہے، کچرے سے لدے ٹریک پر ایتھلیٹس جان ماررہے ہیں، جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ بین الاقوامی مقابلوں میں ہم کیوں پیچھے ہیں.

سندھ گیمز کی سہولیات فراہم کرنا وفاق کی ذمے داری تھی؟

اس ضمن میں‌ جب اے آر وائی نے وزیر کھیل سندھ محمد بخش مہرسے رابطہ کیا، تو انھوں نے کہا کہ سندھ گیمز کے لئے سہولتیں فراہم کرنا ہماری ذمہ داری نہیں، یہ وفاق کے ذمہ ہے.

انھوں نے یقین دلایا کہ ناقص انتظامات کرنے والوں کے خلاف کارروائی ہوگی، تحقیقات کرکے کل تک میڈیا کو آگاہ کریں گے.


ورلڈ کپ میں شکست: ویمن ٹیم کی کھلاڑی موٹربائیک پرگھرگئیں


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں