The news is by your side.

Advertisement

سیاست دانوں کو کرپٹ کہہ کر جیلوں میں ڈالا جاتا ہے، مولانا فضل الرحمان

ایم ایم اے نے کراچی سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے لیے امیدواروں کا اعلان کردیا

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ سیاست دانوں کو کرپٹ کہہ کر جیلوں میں ڈال دیا جاتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار وہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کر رہے تھے، انھوں نےکہا کہ نظریاتی سیاست ختم ہوچکی ہے، اب صرف سرمائے کی سیاست ہو رہی ہے۔

متحدہ مجلس عمل کے صدر کا کہنا تھا کہ عالمی قوتیں پاکستان کے وسائل پر قبضہ جمانا چاہتی ہیں، دنیا چاہتی ہے کہ ہمیں اپنا غلام بنالے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ملک اس وقت مشکل حالات میں ہے، ملک کو بے شمار چیلنجز کا سامنا ہے، سیاست دانوں کو کرپٹ کہہ کر جیلوں میں ڈال دیا جاتا ہے، ایسے حالات میں ملک میں اصل تبدیلی ایم ایم اے لے کر آئے گی۔

انھوں نے یو این او کے کردار پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ دنیا کو امن نہیں دے سکتا، اس کا کردار مشکوک نظر آ رہا ہے، اقوام متحدہ نے آج تک کس مظلوم قوم کو آزادی دلائی ہے؟

خیال رہے کہ ایم ایم اے کی طرف سے انتخابات 2018 کے لیے ملک بھر میں امیدواروں کے اعلانات کا سلسلہ جاری ہے، آج کراچی سے امیدواروں کا اعلان کردیا گیا ہے۔

متحدہ مجلس عمل کے اعلان کے مطابق قومی اسمبلی کے حلقے 246 سے مولانا نورالحق جب کہ این اے247 سے محمد حسین محنتی کا انتخاب کیا گیا ہے۔

ایم ایم اے کے منشور کا اعلان، بااختیار اور آزادعدلیہ، تعلیم، صحت، روزگار کی فراہمی کا عزم


قومی اسمبلی کے حلقے 250 سے جماعت اسلامی کے کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے الیکشن لڑیں گے۔

کراچی سے قومی اسمبلی کے حلقے 256 سے امیر جماعت اسلامی صوبہ سندھ ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی متحدہ مجلس عمل کے امیدوار ہوں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں