site
stats
عالمی خبریں

بھارت میں گائےچوری کاالزام‘2مسلمان نوجوان ہلاک

آسام : بھارتی مشرقی ریاست آسام میں گائے چوری کےالزام میں مقامی لوگوں نے دو مسلمان نوجوانوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

تفصیلات کےمطابق بھارت کی مشرقی ریاست آسام کےنوگاؤں ضلع کا ہےجہاں گائے چوری کے الزام میں دو مسلمان نوجوانوں کو تشدد کرکےہلاک کردیا۔

پولیس کے مطابق بھیڑ میں شامل لوگوں کا کہنا تھا کہ دونوں نوجوان كاساماری کے پاس ایک مخصوص چراگاہ سے گائے چوری کر کے لے جا رہے تھے۔

نوگاؤں کےپولس سپرنٹینڈنٹ دیب راج اپادھیائےنےبتایا کہ جب پولیس جائے وقوعہ پر پہنچی تو وہاں ہجوم دونوں نوجوانوں کو لاٹھیوں سے پیٹ رہا تھا۔


بھینسیں فروخت کرنا جرم بن گیا، بھارت میں دو مسلمانوں کو پھانسی دے دی گئی


پولیس ان دونوں کو علاج کے لیے فوراً ہسپتال لے گئی لیکن شدید چوٹوں کی وجہ سے دونوں نے دم توڑ دیا۔مرنے والے نوجوانوں کی شناخت ابو حنیفہ اور رياض الدين علی کے طور پر کی گئی ہے۔


بھارت میں ایک اورمسلمان کو گائے کے نام پرقتل کردیا


پولیس کے مطابق اس واقعہ میں اب تک گئو ركشک تنظیموں سے منسلک کسی بھی شخص کا نام سامنے نہیں آیا۔

واضح رہےکہ آسام میں بی جے پی اقتدار میں ہے اور اس نے اس سے قبل کئی ریاستوں میں گائے کے متعلق قوانین میں سختی کی ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top