ملتان کے اسکول میں پولیس کی تربیتی مشق، والدین خوفزدہ
The news is by your side.

Advertisement

ملتان کے اسکول میں پولیس کی تربیتی مشق، والدین خوفزدہ

ملتان: نجی اسکول میں والدین کو مطلع کیے بغیر کی جانے والی پولیس کی فرضی تربیتی مشق کو دہشت گردی کا حملہ سمجھ کر والدین پریشان اور خوف زدہ ہو گئے جب کہ ایک طالب علم کی والدہ بے ہوش ہو گئیں،واقعہ پر سی پی او ملتان نے والدین سے معذرت کر لی۔

تفصیلات کے مطابق ملتان کے بوسن روڈ پر واقع نجی اسکول میں والدین کو پیشگی آگاہ کیے گئے بغیر پولیس اور حساس اداروں کی جانب سے فرضی تربیتی مشق کا انعقاد کیا گیا جس میں پولیس کے اہلکاروں ،ریسکیو ادارے اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کی ٹیموں نے حصہ لیا۔ اس دوران پولیس اور دیگر اداروں کی گاڑیاں اسکول کے باہر کھڑی رہیں جنہیں دیکھ کر شہریوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔

دوسری جانب جب والدین کو اطلاع ملی کہ اسکول میں پولیس کی بھاری نفری موجود ہے تو حقیقت سے لاعلم والدین دیوانہ وار اسکول پہنچے اور روتے ہوئے اپنے بچوں کو پکارتے رہے، سیکیورٹی اداروں کے اہلکاروں کی جانب سے وضاحت کے باوجود والدین کو تسلی نہ ہوئی۔

اس دوران ایک والده بچے کو پکارتے ہوئے نیم بےہوشی کی کیفیت میں چلی گئیں جنہیں مقامی افراد نے سنبھالا اور پانی پلایا اور پولیس و اسکول انتظامیہ نے والدہ کو یقین دلایا کہ اسکول پر کوئی حملہ نہیں ہوا ہے بلکہ یہاں صرف تربیتی مشق کی جا رہی ہے تا کہ بچوں کو سمجھایا جا سکے کہ دہشت گردی کے کسی بھی واقعے کے وقت کیا کیا احتیاطی تدابیر کرنی چاہیے۔

صورتِ حال کے بگڑنے اور والدین کے غصے کو دیکھتے ہوئے سی پی او ملتان نے والدین کو ماک ایکسرسائز کی بروقت اطلاع نہ ملنے پر معذرت کی اور آئندہ موک ایکسرسائز سے پہلے اسکول پرنسپل کی اجازت اور طالبِ علم کے والدین کو پیشگی اطلاع دینے کی بھی یقین دہانی کرائی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں