The news is by your side.

Advertisement

کرونا کے خلاف جنگ میں امریکی کمپنی موڈرنا کو بڑی کامیابی مل گئی

واشنگٹن: امریکی کمپنی موڈرنا کی جانب سے تیارہ کردہ کرونا ویکسین کے پہلے آزمائشی مرحلے میں نتائج حوصلہ افزا رہے ہیں۔

دنیا بھر میں متعدد کمپنیوں کی جانب سے کرونا وائرس کی روک تھام کے لیے ویکسینز کی تیاری پر کام ہو رہا ہے، ایسے میں امریکی بائیو ٹیکنالوجی کمپنی موڈرنا کی جانب سے بڑا اعلان سامنے آیا ہے۔

امریکی کمپنی کے  مطابق پہلے آزمائشی مرحلے میں ان کی جانب سے تیار کردہ ویکسین کے نتائج کامیاب رہے ہیں، ویکسین مریضوں کے لیے محفوظ اور قوت مدافعت بڑھانے میں مددگار ثابت ہوئی ہے۔

نیو انگلینڈ طبی جریدے میں شائع مطالعے کے مطابق ایسے افراد جنہوں نے موڈرنا کی ویکیسن کی دو خوراک استعمال کیں ان میں وائرس کو ختم کرنے والی اینٹی باڈیز کرونا سے صحت یاب ہونے والے افراد کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ تھیں۔

طبی جریدے میں شائع ہونے والے مطالعے کے مطابق جن افراد پر کرونا ویکسین استعمال کی گئی ان میں کسی پر بھی خطرناک اثرات مرتب نہیں ہوئے، التبہ کچھ افراد نے تھکاوٹ، سر درد، پٹھوں میں درد جیسی شکایات کیں اور یہ اثرات ایسے افراد میں دیکھے گئے جنہوں نے دوسری خوراک بہت زیادہ مقدار میں لی تھی۔

امریکا کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف الرجی اینڈ انفیکشین ڈیزیزز کے ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے کامیاب نتائج پر کہا کہ یہ اچھی خبر ہے، اس ویکسین سے کوئی بھی منفی اثرات سامنے نہیں‌ آئے، یہ وائرس کے خلاف لڑنے کے لیے اہم ویکسین ہے۔

ڈاکٹر انتھونی فاؤچی کا کہنا تھا کہ اگر امریکی کمپنی موڈرنا کی یہ ویکسین قدرتی انفیکشن کے مقابلے میں کوئی ردعمل دے سکتی ہے تو اسے کامیاب قرار دیتے ہیں۔

واضح رہے کہ چین کی سائنو واک بائیو ٹیک کمپنی نے بھی کرونا کے خاتمے کے لیے تیار کی گئی اپنی ویکسین کے تیسرے مرحلے کے ٹرائلز برازیل میں شروع کر دیے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں