The news is by your side.

Advertisement

نریندرا مودی نوازشریف سے ملاقات کے بعد واپس نئی دہلی روانہ

اسلام آباد: ترجمان وزیراعظم ہاوٗس نے کہا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی آج سہہ پہرلاہورپہنچ رہے ہیں،وزیراعظم نواز شریف ان کا استقبال کریں گے۔

بھارتی وزیراعظم افغانستان کے دورے پر تھے اور آج انہوں نے وزیراعظم نواز شریف کو فون پرسالگرہ کی مبارک باد پیش کی، مودی نے اپنے ٹویٹرپیغام میں خواہش ظاہر کی تھی کہ وہ وزیراعظم میاں نواز شریف سے آج لاہور میں ملاقات کرنا چاہتے ہیں۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے پاکستان کے اپنے پہلے دورے کے لئے بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے یومِ پیدائش کا دن منتخب کیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بھارتی وزیراعظم کے اس دورے میں پاکستان اور بھارت کے درمیان انتہائی اہم مسائل پر گفتگو کی جائے گی۔

نریندر مودی کو رن وے سے ایئرپورٹ کی عمارت تک پینچانے کے لئے خصوصی بلٹ پروف گاڑی کا اہتمام کیا گیا ہے جسے رن وے پر پہنچا دیا گیا ہے۔


لمحہ بہ لمحہ اپ ڈیٹ


– مودی لاہور میں –

وزیراعظم نواز شریف اور ان کے بھارتی ہم منصب نریندر مودی کے ہمراہ جاتی امراء پہنچ چکے ہیں، ہیلی کاپٹر نے شریف میڈیکل سٹی کے کمپاوٗنڈ میں لینڈ کیا۔

اس موقع پر وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف بھی انکے ہمراہ موجود ہیں اور شریف خاندان کے افراد بھی شریف میڈیکل کمپلکس پہنچ چکے ہیں۔

وزیراعظم نواز شریف نے نریندر مودی کا استقبال کیا اور معانقہ کیا، وزیراعظم نوازشریف اور نریندر مودی ہیلی کاپٹر میں بیٹھ کر رائیونڈ میں میاں نواز شریف کی رہائش گاہ جاتی امراء کی جانب روانہ ہوگئے ہیں۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا طیارہ لاہور ایئرپورٹ پرشام 4:20 منٹ پر لینڈ کر گیا ہے، پاکستانی وزیراعظم نواز شریف اعلیٰ حکام اور اہم حکومتی وزراء کے ہمراہ ان کے استقبال کے لئے موجود ہیں، مودی کے ہمراہ 120 ارکان کا وفد بھی ہے۔

یہ کسی بھی بھارتی وزیراعظم کا گیارہ سال بعد پہلا دورہ ہے ، اس موقع پر وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف ، وزیرخزانہ اسحاق ڈار اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے ۔

نریندر مودی وزیر اعظم نواز شریف کے ہمراہ بذرعی ہیلی کاپٹر جاتی امراء کیلئے روانہ ہوگئے۔

جہاں انہوں نے میاں نواز شریف کے اہل خانہ سے ملاقات کی اور ان کو نواز شریف کی نواسی کئی شادی کی مبارکباد دی۔


دونوں رہنما کچھ دیر ساتھ رہے اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا،

بعد ازاں بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی وزیراعظم  نوازشریف سے  مختصر ملاقات کے بعد جاتی امراء سے ایئر پورٹ کیلئے روانہ ہو ئے۔ جہاں سے وہ نئی دہلی کیلئے روانہ ہوگئے ہیں۔

ایئر پورٹ پر وزیر اعظم نواز شریف اور دیگر اعلیٰ حکام نے انہیں رخصت کیا۔

ذرائع کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندرمودی اور پاکستانی وزیراعظم کی یہ ملاقات ایئرپورٹ تک محدود رہے گی۔

– سشما سووراج کا ٹویٹ –

بھارتی وزیرِ خارجہ سشما سووراج نے اپنے ٹویٹر پیغام میں نریندر مودی کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ پڑوسیوں کے ساتھ اسی قسم کے رشتے ہونے چاہئے۔

 

– وزیراعظم ہاؤس کی تصدیق –

وزیراعظم ہاوٗس کےترجمان کی جانب سے بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کی لاہورآمد کی اطلاع کی تصدیق کردی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ نریندر مودی کا طیارہ  کچھ دیربعد لاہورمیں لینڈ کرے گا

ترجمان نے یہ بھی کہا ہے کہ بھارتی وزیراعظم کی آمد کے موقع پران کے پاکستانی ہم منصب نواز شریف ان کےاستقبال کے لئے ایئرپورٹ جائیں گے۔

 – سیکیورٹی حکمت عملی –

بھارتی وزیراعظم کی پاکستان آمد کی خبر پر پنجاب پولیس ڈیپارٹمنٹ میں ہل چل مچ گئی اورفوری طور پراعلیٰ سطحی اجلاس طلب کرلیا گیا۔

اعلیٰ سطحی اجلاس میں بھارتی وزیراعظم کی پاکستان آمد پر سیکیورٹی حکمت عملی تشکیل دے دی گئی ہے۔

سیکیورٹی حکمت عملی کے تحت پرانے ایئرپورٹ کی سیکیورٹی پاک فوج اوررینجرز نے سنبھال لی ہےاورسوائے حساس اداروں کہ کسی شخص کو وہاں جانے کی اجازت نہیں ہے۔

 – نریندرمودی کے ٹویٹرپیغامات –

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے یہ بھی کہا ہے کہ آج شام دہلی واپس جاتے ہوئے وہ پاکستان کے شہر لاہور میں پاکستانی وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کرنا چاہتے ہیں۔

– سالگرہ کی مبارک باد –

بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا تھا کہ انہوں نے اپنے پاکستانی ہم منصب وزیراعظم نواز شریف سے گفتگو کی ہے اورانہیں ان کی پینسٹھ ویں سالگرہ مبارک باد پیش کی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں بھارتی وزیرخارجہ سشما سووراج نے پاکستان کا دورہ کیا تھا جس میں وزیراعظم نواز شریف کے ساتھ ہونے والی اہم ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے دو طرفہ تعلقات کی بحالی کے لئےمذاکرات کرنے پر اتفاق رائے کا اظہارکیا تھا۔


پاکستان کا دورہ کرنے والے بھارتی وزرائےاعظم


 – 25تا 27 جولائی، 1953 –

بھارت کے پہلے وزیراعظم جواہر لعل نہرو نے جولائی 1953 میں پاکستان کا دوروزہ دورہ کیا تھا جس میں پہلی بار دونوں ممالک نے مسئلہ کشمیر حل کرنے کی سنجیدہ کوشش کی تھی۔

 – 19تا 23 ستمبر، 1960 –

بھارتی وزیراعظم جواہرلعل نہرو نے سندھ طاس معاہدے کے سلسلے میں پاکستان کا دوسرا دورہ کیا، دورے کے دوران کراچی، مری ، نتھیا گلی، راولپنڈی اور لاہور میں ان کا فقید المثال استقبال کیا گیا۔

 – 29تا 31 دسمبر، 1988 –

سن 1960 کے 28 سال بعد راجیو گاندھی وہ بھارتی وزیراعظم تھے جنہوں نے اسلام آباد میں ہونے والی سارک سمٹ میں شرکت کے لئے پاکستان کادورہ کیا۔ اس دورے میں تین اہم معاہدوں پر دستخط ہوئے جس میں سب سے اہم ایک دوسرے کی ایٹمی تنصیبات پر حملے نہ کرنے کا معاہدہ تھا۔

 – 16-17جولائی 1989 –

بھارتی وزیراعظم نے پاکستان کا دوسرا دورہ کیا تاہم دونوں ممالک اندرونی دباوٗ کے سبب کسی مثبت پیش رفت سے قاصررہے۔

 – 19-20فروری، 1999 –

بھارتی وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی نے لاہور دہلی بس سروس کے افتتاح کے لئے پاکستان کا دورہ کیا۔

 – 4تا6 جنوری، 2004 –

بھارتی وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی سارک سمٹ میں شرکت کےلئے اسلام آباد تشریف لائے اور اس دورے میں ہونے والی اہم پیشرفت سے ان کے بعد آںے والے من موہن سنگھ کو تعلقات کو بہتر بنانے کا موقع ملا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں