The news is by your side.

Advertisement

معیدیوسف نے خلیجی ممالک میں ہزاروں افراد کے بےروزگارہونے کی اطلاع درست قرار دے دی

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی معیدیوسف کا کہنا ہے کہ خلیجی ممالک میں ہزاروں افراد کے بے روزگار ہونے کی اطلاع درست ہے، ہماری کوشش ہے ہر ہفتے 6سے 7ہزار پاکستانیوں کو واپس لایا جائے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی معیدیوسف نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں گفتگو کرتے ہوئے کہا بیرون ملک  سے پاکستانیوں کومحفوظ طریقےواپس لاناچاہتےہیں، بیرون ملک سے ہر پاکستانی کو واپس لانا ہماری ذمے داری ہے اور واپس آنے والے ہر شخص کی ٹیسٹنگ اور قرنطینہ ضروری ہے۔

معیدیوسف نے تصدیق کی کہ خلیجی ممالک میں ہزاروں افرادکے بے روزگارہونے کی اطلاع درست ہے جبکہ مغربی ممالک میں ہزاروں افراد کے بے روزگار ہونے کی اطلاع غلط ہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ ہماری کوشش ہےہرہفتے 6سے7ہزارپاکستانیوں کوواپس لایاجائے، لوگوں کے آنے کی صورتحال کی نگرانی کرتے رہیں گے، 20 اپریل سے جولوگ آرہے ہیں ان کو آپشن دیےجائیں گے ، باہر سے آنے والوں کو ہوٹل میں قرنطینہ کے اخراجات اٹھانے ہوں گے۔

انھوں نے مزید کہا جیسے جیسے لوگوں آتے جائیں گےپالیسی اور صورتحال کو مانیٹر کرتے رہیں گے، 20 اپریل سے جو لوگ آرہے ہیں ان کو آپشن دیے جائیں گے ، اگرسرکاری قرنطینہ میں رہنا چاہتے ہیں تووہ سہولت مفت دیں گے۔

معید یوسف کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سےکچھ لوگ ہوٹل گئے اور قرنطینہ کے بعد پیسے نہیں دیے، حکومت کے پاس اتنے وسائل نہیں کہ ہوٹلوں میں قرنطینہ دے سکے۔

گذشتہ روز وزیراعظم کے معاون خصوصی معیدیوسف نے کہا تھا کہ یو اے ای میں رہا کیے گئے پاکستانی قیدیوں کوجلدلائیں گے، بیرون ملک پاکستانیوں کو معلومات کیلئے ویب سائٹ بنارہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ جو مسافرہوٹل میں قرنطینہ چاہتے ہیں وہ اپنے اخراجات کریں، بہت سے مسافروں نے ہوٹل جانے سے انکارکردیا ہے، مسافر ہوٹل کا خرچہ نہیں اٹھاسکتے تو حکومتی قرنطینہ میں جائیں۔

معیدیوسف نے مزید کہا تھا کہ جوپالیسی ہے وہ سب کو فالو کرنا ہوگی، اندرون ملک پروازیں اس وقت بند ہیں اور تاحکم ثانی بندرہیں گی، بھارت میں موجود 41پاکستانی کل صبح واپس پہنچ جائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں