The news is by your side.

Advertisement

‘افغانستان میں خوراک اورادویات شدید قلت ، مائیں بچوں کو بیچنے پر مجبور’

اسلام آباد : مشیر برائے قومی سلامتی ڈاکٹرمعیدیوسف کا کہنا ہے کہ افغانستان میں خوراک اورادویات شدید قلت کے باعث گھریلو اشیا کیلئے مائیں بچوں کو بیچنے پر مجبورہیں، دنیا سے گزارش کروں گا ، 35ملین افغان مرد،خواتین ،بچوں کا سوچیں۔

تفصیلات کے مطابق مشیر برائے قومی سلامتی ڈاکٹرمعیدیوسف نے امریکی سی این این کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں خوراک اورادویات شدید قلت ہے، افغانستان میں گھریلو اشیا کیلئے مائیں بچوں کو بیچنے پر مجبورہیں۔

معید یوسف کا کہنا تھا کہ افغان عوام کی انسانی امدادسیاست سےبالاترہونی چاہیے، عالمی تنظیموں کوہیلتھ ورکرکی معاونت کرنے اور تنخواہیں فراہم کرنے کی اجازت دی جائے۔

مشیر برائے قومی سلامتی نے کہا کہ وزیراعظم نےافغانستان کےعوام کےلیےامدادی پیکیج کااعلان کیا،پاکستان نے فضائی اور زمینی پل بننے کی پیشکش کردی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ عالمی ادارے افغانستان کو خوراک اور ادویات کی فراہمی کےلیےپاکستانی سرزمین استعمال کرسکتےہیں، دنیا سے گزارش کروں گا ، 35ملین افغان مرد،خواتین ،بچوں کا سوچیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں