The news is by your side.

امریکا: سفاک ماں نے 2 سالہ بیٹی کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا

واشنگٹن: امریکا میں سفاک ماں نے اپنی 2 سالہ بیٹی کو فائرنگ کر کے موت کے گھاٹ اتار دیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کے شہر ملواکی میں افسوس ناک واقعہ پیش آیا جہاں 22 سالہ ماں جیسمین ڈینیل نے اپنی کمسن بیٹی کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا۔

پراسیکیوٹر کے مطابق قتل کے الزام میں گرفتار ہونے والی 22 سالہ جیسمین نے کم از کم پانچ بار اپنے بیانات تبدیل کیے اور یہاں تک کہ اپنے 3 سالہ بیٹے کو بھی مورد الزام ٹھہرایا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ صبح 7 بجکر 30 منٹ پر عینی شاہدین نے فائرنگ کی آواز سنی اور جیسمین کو اپنی بچی کے ساتھ باہر بھاگتے ہوئے دیکھا جسے گولی لگی تھی۔

پیرا میڈکس نے 2 سالہ بچی کی جان بچانے کی ہر ممکن کوشش کی لیکن وہ اسپتال منتقل کرنے کے دوران جان کی بازی ہار گئی۔

جیسمین ڈینیل نے تفتیش کے دوران بتایا کہ وہ اپنے 3 سالہ بیٹے اور 2 سالہ بیٹی کے ساتھ تہہ خانے میں تھی جہاں ٹیبل پر ایک بندوق پڑی ہوئی تھی۔ ملزمہ کا کہنا تھا کہ اچانک مجھے گولی چلنے کی آواز سنائی دی اور جب میں نے دیکھا تو میرا تین سالہ بیٹا رو رہا تھا اور 2 سالہ بیٹی خون میں لت پت تھی۔

ملزمہ نے تفیتش کے دوران اپنے تین سالہ بیٹے پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اس سے حادثاتی طور پر گولی چلی۔

پولیس حکام نے بتایا کہ رہائش گاہ کی تلاشی کے دوران انہیں منشیات، ہینڈ گن ملی لیکن واردات میں استعمال ہونے والی بندوق نہیں ملی۔ پولیس کے مطابق ملزمہ نے فائرنگ کے واقعے کے کچھ دن بعد اعتراف کر لیا کہ مجھ سے غلطی سے گولی چلی۔

پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ جیسمین نے اعتراف کیا کہ وہ تہہ خانے میں اپنی بندوق کے ساتھ کھیل رہی تھی اور اس دوران گولی چلنے سے اس کی دو سالہ بیٹی کی موت واقع ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں