The news is by your side.

آرمی چیف کی ہدایت : پاک فوج کی امدادی سرگرمیوں میں مزید تیزی

راولپنڈی : آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی ہدایت پر پاک فوج کی امدادی سرگرمیوں میں مزید تیزی آگئی۔

‌تفصیلات کے مطابق پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاک فوج کی امدادی سرگرمیوں میں گزشتہ 24گھنٹوں کےدوران مزید تیزی آگئی۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ سیلاب متاثرین میں 5487راشن بیگ، 1200سےزائدخیمے تقسیم کئے گئے اور اب تک 25 ہزار سے زائد مریضوں کا علاج کیا جا چکا ہے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہملک بھرمیں 117ریلیف کیمپ بھی قائم کردیے گئے ہیں اور آرمی ایئرڈیفنس کمانڈ کے تحت قائم کوآرڈینیشن سینٹر ریسکیو کوششوں کو مربوط بنا رہا ہے۔

ترجمان کے مطابق امدادی اشیاکی وصولی ،تقسیم کی کوششوں کوہم آہنگ کرنے کیلئے کلیکشن پوائنٹس قائم کردیئے گئے ہیں۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ مالم جبہ میں سب سے زیادہ 58 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جبکہ دریائے جہلم، راوی، چناب اور ستلج معمول کے مطابق بہہ رہے ہیں۔

پاک فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ دریائے سندھ میں اٹک میں انتہائی اونچے درجے کا سیلاب جبکہ تونسہ اور سکھر میں اونچے درجے کا سیلاب ہے۔

آئی ایس پی آر نے کہا کہ چشمہ، گڈو ،کوٹری میں درمیانے درجے کا سیلاب، تربیلا ،کالاباغ میں نچلے درجے کا سیلاب اور دریائے کابل نوشہرہ میں بہت اونچےدرجے کا سیلاب ہے۔

جنوبی پنجاب کے متاثرہ اضلاع میں ڈی جی خان اور راجن پور، بلوچستان کے متاثرہ اضلاع میں خضدار، سبی، نصیر آباد، جعفرآباد ، جھل مگسی، لسبیلہ، صحبت پور اور موسیٰ خیل شامل ہیں۔

سندھ کے متاثرہ اضلاع میں ٹنڈو الہ یار، خیرپور، بدین، دادو ، سکھر، قمبر شہداد کوٹ، گھوٹکی اور لاڑکانہ شامل ہیں۔.

اسی طرح خیبر پختونخواکےمتاثرہ اضلاع میں ڈی آئی خان، ٹانک، سوات، نوشہرہ اور چارسدہ جبکہ گلگت بلتستان کے متاثرہ اضلاع میں گلگت، ہنزہ اور غذر شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں