5 سال میں دہشت گردی کے الزامات میں 16 ہزار سے زائد افراد گرفتار -
The news is by your side.

Advertisement

5 سال میں دہشت گردی کے الزامات میں 16 ہزار سے زائد افراد گرفتار

اسلام آباد: سینیٹ اجلاس میں وزارت داخلہ نے اپنے تحریری جواب میں بتایا گیا کہ 5 سال میں دہشت گردی کے الزامات پر 16 ہزار 6 سو 22 افراد کو گرفتار کیا گیا جن میں سے 3 سو 76 کو سزائے موت دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق قائم مقام چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کی زیر صدارت سینیٹ کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں وزارت داخلہ نے اپنا تحریری جواب جمع کروایا۔

جواب میں پانچ سال کے دوران اسلام آباد میں زیادتی کا شکار بچوں کی تفصیلات پیش کی گئیں۔

رپورٹ کے مطابق 79 بچوں اور بچیوں سے زیادتی کے مقدمات درج ہوئے۔ کل 100 ملزمان گرفتار کیے گئے جن میں سے صرف 4 کو سزا سنائی گئی۔

وزارت داخلہ کی جانب سے جمع کروائے گئے ایک اور تحریری جواب میں بتایا گیا کہ 5 سال میں دہشت گردی کے الزامات پر 16 ہزار 6 سو 22 افراد کو گرفتار کیا گیا۔

پنجاب سے 10 ہزار 993، سندھ سے 2 ہزار 728، پختونخواہ سے1967، بلوچستان سے 147، گلگت بلتستان سے 126 اور اسلام آباد سے 61 افراد کو گرفتار کیا گیا۔

وزارت داخلہ کے مطابق فاٹا اور آزاد کشمیر سے گرفتار افراد کی رپورٹ تا حال موصول نہیں ہوئی۔ 5 سال میں دہشت گردی پر 376 مجرمان کو سزائے موت سنائی گئی۔

پنجاب میں 330، سندھ میں 19، بلوچستان میں 15، پختونخواہ میں 7 اور گلگت بلتستان میں 5 دہشت گردوں کو سزائے موت سنائی گئی۔

رپورٹ کے مطابق پانچ سال میں 2 ہزار 525 افراد کو دہشت گردی ثابت ہونے پر سزا سنائی گئی۔ اسلام آباد میں بھی 2 افراد کو دہشت گردی کے مقدمات میں سزا ہوئی۔

وزارت داخلہ کا کہنا تھا کہ سنہ 2015 میں دہشت گردی کے الزام میں 4 ہزار 439 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں