The news is by your side.

Advertisement

لاہورمیں بارش‘ چھتیں گرنے، کرنٹ لگنےسے6 افراد جاں بحق، دس زخمی، بجلی غائب

لاہور : تین گھنٹے کی موسلادھار بارش سے لاہور کی سڑکیں زیرِآب، گلی محلے اور گھرتالاب بن گئے، چھتیں گرنے اور کرنٹ لگنے سے چھ افراد جاں بحق چھ زخمی ہوگئے، بجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں بارش نے سابق خادم اعلیٰ کی اعلیٰ کارکردگی کا پول کھول دیا، پورا شہربارش کے پانی میں ڈوب گیا، سڑکیں ندی نالوں اورمحلے تالابوں کا منظر پیش کرنےلگے، سڑکیں بنانے والوں کے شہر کی سب سے بڑی اور اہم شاہراہ مال روڈ پر کئی فٹ گہرا شگاف پڑگیا۔

تین گھنٹےمیں مسلسل بارش نے ن لیگی حکومت کی کارکردگی کو ڈبو دیا، میٹرو کے شہر میں لوگوں کوآمد ورفت کے لیے کشتیوں کا سہارا لینا پڑا، گلبرگ جیسے پوش علاقے بھی بارش کے پانی میں ڈوب گئے۔ گھروں میں پانی گھس گیا، گھروں میں موجود قیمتی سامان تباہ ہوکر رہ گیا۔


لاہور میں آندھی کے ساتھ موسلادھاربارش نے تباہی مچادی، تین گھنٹےمیں 238 ملی میٹربارش کے بعد نالےاورمحلےتالاب بننے سے پیرس بنانے کے دعوے پانی میں غرق ہو گئے

مختلف علاقوں ریواز گارڈن اور قرطبہ چوک  میں گھروں کی چھتیں گرنے کرنٹ لگنے سے 6 افراد جاں کی بازی ہار  گئے جبکہ دس افراد کو  زخمی حالت میں اسپتال منتقل کرنا پڑا ۔

 لاہور ہی کےعلاقے جوہرٹاؤن میں مکان کی چھت گرنے سے ماں او دو بچے زخمی ہوگئے جنہیں طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا۔

موسلادھار بارش سے شہر کے مختلف علاقوں میں دو سو سے زائد فیڈرز ٹرپ کرگئے، شادمان، مسلم ٹاؤن، ہربنس پورہ سمیت متعدد علاقے تاریکی میں ڈوب گئے۔

طوفانی بارش کے باعث نشیبی علاقوں میں کئی کئی فٹ پانی جمع ہے، بارش کا سلسلہ تھم جانے کے بعد بھی پانی کی سطح میں کمی نہیں آسکی۔

دوسری جانب واسا نے ایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے نشیبی علاقوں سے پانی کو فوری طور پرنکالنے کی ہدایت جاری کردی، واضح رہے کہ محکمہ موسمیات کے مطابق بارشوں کا یہ سلسلہ آئندہ 48 گھنٹوں تک جانے رہنے کا امکان ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں