The news is by your side.

Advertisement

مرسی کی وفات، عالمی تنظیموں کا آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ

لندن: وکلاء کی عالمی تنظیم نے ڈاکٹر محمد مرسی کی دوران حراست اچانک وفات پر آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کی طرف سے مصر کے سابق صدر ڈاکٹر محمدمرسی کی دوران حراست اچانک وفات کی تحقیقات کا مطالبہ شدت اختیار کرتا جا رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ اور دیگر تنظیموں کے بعد وکلاء کی بین الاقوامی تنظیم نے بھی سابق مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی دوران حراست موت کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی وکلاء ایسوسی ایشن کے جنیوا میں قائم ہیڈکواٹر سے جاری ایک میں مصر میں عبدالفتاح السیسی کی حکومت کی پالیسیوں کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

جنیوا میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق ہائی کمیشن کے دفتر کے باہر ڈاکٹر محمد مرسی کی وفات کی تحقیقات اور مصری حکومت کی مذمت میں ایک مظاہرہ کیا گیا۔

عالمی وکلاء تنظیم نے الزام عاید کیا کہ ڈاکٹر محمد مرسی کی بیماری میں غفلت برت کر انہیں سسک سسک کر مرنے پر مجبور کیا گیا۔

’’شہید محمد مرسی قضیہ فلسطین کے محافظ اور بے لوث سپاہی تھے‘‘

ان کی موت کی ذمہ داری مصری رجیم ہے جو انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کی مرتکب ہو رہی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز حماس رہنما خالد مشعل نے کہا تھا کہ شہید محمد مرسی قضیہ فلسطین کے محافظ اور بے لوث سپاہی تھے، سابق مصری صدر کے انتقال پر افسوس ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں