The news is by your side.

Advertisement

ماؤں کا عالمی دن: میری شہ رگ پہ میری ماں کی دعا رکھی تھی

آج دنیا بھر میں ماؤں کا عالمی دن منایا جارہا ہے، آج کے دن کا مقصد ماؤں کی عظمت کا اعتراف اور انہیں ادنیٰ سا خراج تحسین پیش کرنا ہے۔

ماؤں کا عالمی دن منانے کی تاریخ بہت قدیم ہے اور اس کا سراغ سب سے پہلے یونانی تہذیب میں ملتا ہے جہاں تمام دیوتاؤں کی ماں گرہیا دیوی کے اعزاز میں یہ دن منایا جاتا تھا۔

سولہویں صدی میں ایسٹر سے 40 روز پہلے انگلستان میں ایک دن مدرنگ سنڈے کے نام سے موسوم تھا، امریکا میں مدرز ڈے کا آغاز 1872 میں ہوا۔

سنہ 1907 میں فلاڈلفیا کی اینا جاروس نے اسے قومی دن کے طور پر منانے کی تحریک چلائی جو بالآخر کامیاب ہوئی اور 1911 میں امریکا کی ایک ریاست میں یہ دن منایا گیا۔

ان کوششوں کے نتیجے میں 8 مئی 1914 کو امریکا کے صدر ووڈرو ولسن نے مئی کے دوسرے اتوار کو سرکاری طور پر ماؤں کا دن قراردیا، اب دنیا بھر میں ہر سال مئی کے دوسرے اتوار کو یہ دن منایا جاتا ہے۔

پاکستان میں اس دن کے حوالے سے لوگ دو طبقوں میں تقسیم نظر آتے ہیں، ایک وہ جو اس دن کو ماؤں کی عظمت کے لیے اہم قرار دیتے ہیں۔

دوسرے طبقے کا کہنا ہے کہ ماؤں سے محبت کے لیے ایک دن مختص کرنے کا کیا جواز جبکہ ماں جیسی عظیم ہستی ہمیشہ محبت و تکریم کے لائق ہے۔

ماؤں کے عالمی دن کے موقع پر ہمیں یہ یاد رکھنا چاہیئے کہ والدین ایک سائے کی طرح ہیں جن کی ٹھنڈک کا احساس ہمیں اس وقت تک نہیں ہوتا جب تک یہ سایہ سر پر موجود رہتا ہے، جونہی یہ سایہ اٹھ جاتا ہے تب احساس ہوتا ہے کہ ہم کیا کھو بیٹھے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں