The news is by your side.

وزیراعلیٰ پنجاب کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کا فیصلہ

لاہور: چیئر مین پی ٹی ۤآئی عمران خان کی جانب سے تمام اسمبلیوں سے مستعفی ہونے کے اعلان نے سیاست میں ہلچل مچادی ہے۔

ذرائع کے مطابق اس ہلچل کا آغاز بھی ملک کے سب سے بڑے صوبے پنجاب سے ہوا ہے، جہاں پنجاب اسمبلی کو تحلیل ہونے سے روکنے پر نون لیگ اور اتحادیوں کے درمیان اہم مشاورت ہوئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ لیگی ایم پی ایزاور اتحادیوں کی اکثریت نے وزیراعلیٰ پنجاب کےخلاف عدم اعتماد لانے کا مشورہ دیا ہے جبکہ بعض ارکان نے گورنرکی جانب سے وزیراعلیٰ کو اعتماد کا ووٹ لینے کی رائے دی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ عدم اعتماد کی صورت میں وزیراعلیٰ کو اسمبلی سے186ووٹ لیناہوں گے، تحریک عدم اعتماد یا اعتماد کےووٹ لینے تک وزیراعلیٰ پنجاب فوری اسمبلی نہیں توڑسکتے۔

اس وقت میں پنجاب اسمبلی میں حکومتی اتحاد کے190 ارکان ہیں، جن میں پی ٹی آئی کے 180اور ق لیگ کے10ارکان ہیں۔

ذرائع کا دعویٰ ہے کہ تحریک عدم اعتماد جمع کروا کر اپوزیشن جوڑ توڑ کرے گی جبکہ تحریک عدم اعتماد لانےکا حتمی فیصلہ ن لیگ اوراتحادیوں کی قیادت کرےگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں