مولانا سمیع الحق: ایک بڑا عالم دین اور معتبر سیاست دان رخصت ہوا moulana sami ul haq
The news is by your side.

Advertisement

مولانا سمیع الحق: ایک بڑا عالم دین اور معتبر سیاست دان رخصت ہوا

 جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ  مولانا سمیع الحق کو راولپنڈی میں چھریوں کے وار کرکے شہید کردیا گیا، وہ ایک ممتاز مذہبی اسکالر  اور سینئر سیاست دان تھے۔ 

آئیں ان کی زندگی پر نظر ڈالتے ہیں:

مولانا سمیع الحق 18 دسمبر 1937 کو اکوڑہ خٹک میں پیدا ہوئے،وہ  پاکستان کے ممتاز مذہبی اسکالر اور سیاست دان تھے، وہ دارالعلوم حقانیہ کے مہتمم اور سربراہ تھے، مولانا صاحب دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین اور جمعیت علماء اسلام (س) کے امیر رہے۔

مولانا سمیع الحق سینیٹر بھی رہے،وہ متحدہ دینی محاذ کے بانی تھے جو پاکستان کے  مذہبی جماعتوں کا اتحاد ہے۔ یہ اتحاد  انہوں نے 2013 کے انتخابات میں شرکت کرنے کے لیے بنایا تھا۔

حالات زندگی

مولانا سمیع الحق کے والد کا نام مولانا عبدالحق تھا، انہوں نے 1946ء میں دارالعلوم حقانیہ میں تعلیم شروع کی جس کی بنیاد ان کے والد نے رکھی تھی وہاں انہوں نے فقہ اصول فقہ، عربی ادب اور حدیث کا علم سیکھا ان کو عربی زبان پر عبور حاصل تھا لیکن ساتھ ساتھ قومی زبان اردو اور علاقائی زبان پشتو میں بھی کلام کرتے تھے۔

افغانستان کے حالات پر کردار

مولانا سمیع الحق افغانستان میں طالبان کے دوبارہ برسر اقتدار آنے کے حامی تھے ان کی قیادت کے معترف تھے ، انہوں نے ایک موقع پر کہا تھا کہ  یہ آزادی کے لیے ایک جنگ ہے اور یہ تب تک ختم نہیں ہوگی جب تک بیرونی لوگ چلے نہ جائیں۔

چند ماہ قبل بھی افغان حکومت کی جانب سے مولانا سمیع الحق کو طالبان سے مذاکرات کرنے کے لیے کردار ادا کرنے کی دعوت کی گئی تھی تاہم انہوں نے افغان حکام سے معذرت کرلی تھی۔

مشہور فتویٰ

تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے پولیو کے حفاظتی قطروں کو غیراسلامی قرار دیا گیا تھا، البتہ مولانا سمیع الحق نے 9 دسمبر 2013 کو پولیو کے حفاظتی قطروں کی حمایت میں ایک فتویٰ جاری کیا۔

ملا عمر بہترین طالب علم

ماضی میں ایک بار مولانا سمیع الحق نے ملا عمر کو اپنے بہترین طالب علموں میں سے ایک قرار دیا تھا اور انہیں ایک فرشتہ نما انسان کہا تھا۔

یاد رہے کہ مولانا سمیع الحق کی جماعت نے رواں سال 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات اسلامی جماعتوں کی متحدہ جماعت متحدہ مجلس عمل سے الحاق نہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف سے اتحاد کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں