The news is by your side.

Advertisement

ٹریفک سارجنٹ کے اہل خانہ اور ایم پی اے کے درمیان صلح، معاہدہ تیار

کوئٹہ : ٹریفک وارڈن کو کچلنے والے ایم پی اے عبدالمجید اچکزئی اور ٹریفک سارجنٹ کے اہل خانہ درمیان صلح ہو گئی ہے جس کے تحت ٹریفک سارجنٹ کے بیٹے کو سرکاری نوکری، گھر اور60 سال تک مکمل تنخواہ بہ طور پینش دی جائے گی جب کہ اہل خانہ ایم پی اے کو معاف کردیں گے۔

تفصیلات کے مطابق ایم پی اے عبدالمجید کی گاڑی سے ٹکر لگنے کے باعث جاں بحق ہونے والے ٹریفک سارجنٹ کے اہل خانہ اور ایم پی اے کے درمیان صلح نامہ قرار پا گیا ہے جس کے تحت اہل خانہ نے ایم پی اے مجید اچکزئی کو معاف کردیا ہے۔

تحریری معاہدے کے تحت ٹریفک وارڈن کے بیٹے کو سرکاری نوکری دی جائے گی جب کہ اہل خانہ کو رہنے کیلئے پولیس لائن میں سرکاری کوارٹر بھی دیا جائے گا اورسب انسپکٹر حاجی عطاء للہ کو شہید کا درجہ دلا کر 60 سال تک پوری تنخواہ ادا کی جائے گی۔

معاہدے کے تحت ان شرائط پر ٹریفک سارجنٹ کے اہل خانہ صلح خانہ میں مقدمہ میں عبدالمجید اچکزئی کے ساتھ تعاون کریں گے اور انہیں قتل کے مقدمے میں معاف کردیں گے۔


 *کوئٹہ میں رکن بلوچستان اسمبلی کی گاڑی نے ٹریفک اہلکار کو کچل دیا 


ذرائع کے مطابق اس صلح نامے پر ٹریفک وارڈن کی بیوہ اور بھائی نے دستخط کر دیئے ہیں جو کہ سادہ سے صفحے پر گواہان کی موجودگی میں مرتب کیا گیا ہے اور دونوں جانب سے دستخط کردیئے گئے ہیں جس کے بعد گرفتار ایم پی اے کی رہائی ممکن پوتی نظر آرہی ہے۔

یاد رہے کہ ایم پی اے عبدالمجید اچکزئی نے چند روز قبل اپنی گاڑی سے سڑک پر کھڑے ٹریفک وارڈن کو کچل دیا تھا سی سی ٹی وی فوٹیجز سامنے آنے کے بعد ایم پی اے کی گرفتاری عمل میں آئی اور چیف جسٹس آف پاکستان سپریم کورٹ نے بھی اس واقعہ کا ازخود نوٹس لیا تھا۔

دوسری جانب ٹریفک سارجنٹ کے بھائی سیف اللہ نے اے آر وائی نیوزسے گفتگو کرتے ہوئے کسی بھی قسم کے معاہدے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اہل خانہ نےایم پی اے مجیداچکزئی سے صلح نہیں کی بلکہ ہم نےکیس میں قانونی معاونت کیلئےدرخواست دی تھی۔

 ٹریفک سارجنٹ کے بھائی سیف اللہ کا مذید کہنا تھا کہ شہید بھائی کےخون کا سودا نہیں کریں گے اورصلح سے متعلق خبریں درست نہیں ہیں جان بوجھ کرجھوٹا پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے اور ہمیں بدنام کیا جارہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں