The news is by your side.

Advertisement

مجھ پر ایک پیسےکی بھی کرپشن ثابت ہوئی تو سیاست چھوڑ دوں گا: وجیہہ الزمان

اسلام آباد: رکن خیبر پختونخواہ اسمبلی وجیہہ الزمان نے کہا ہے کہ عمران خان کی جانب سے لگائے گئے الزامات سے مایوسی ہوئی،مجھ پر ایک پیسے کی کرپشن ثابت کردیں تو سیاست چھوڑ دوں گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، رکن کے پی اسمبلی وجیہہ الزمان کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کے بنیادی کارکنوں کو نشانہ بنایا گیا، عمران خان نے اپنے بھائی اور بہنوئی کو بھی پارٹی سے نکالا، متاثرہ ایم پی ایز سے ملاقات میں مستقبل کی حکمت عملی تیار کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری ہر بات رد کر کے پارٹی سے نکالا گی، اگر یہ وژن ہے تو کوئی بھی شریف آدمی پی ٹی آئی میں نہیں رہ سکتا، ہم پر الزام ہے کہ ہم نے سینیٹ میں ووٹ کی خاطر 3 کروڑ روپے وصول کیے لیکن حقیقت اس کے برخلاف ہے، تمام الزامات بے بنیاد ہیں۔

عمران خان کا بڑا فیصلہ: سینیٹ الیکشن میں بکنے والے20اراکین کے نام بتا دیئے

پی ٹی آئی کے دیگر رہنماؤں کی جانب سے لگائے گئے الزمات کے درعمل میں وجیہہ الزمان کا کہنا تھا کہ الزام لگانے والے رہنماؤں کے خلاف قانونی کارروائی کروں گا جبکہ اعظم سواتی سے میرے خاندانی اختلافات ہیں، لیکن مایوسی ہوئی کہ خان صاحب نے ہم پر الزامات لگائے، چیف جسٹس سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ معاملے کا نوٹس لیں۔

دوسری جانب ایم پی اے فیصل زمان نے بھی سینیٹ مں ووٹ بیچنے کا الزام مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم پر الزامات بے بنیاد ہیں، پی ٹی آئی میں سازشی ٹولےکوبےنقاب کروں گا، کمیٹی نے مجھے سنے بغیر فیصلہ دیا، اپنی بے گناہی ثابت کروں گا، پارٹی نے اگر ٹکٹ نہ بھی دیا تب بھی اکثریت سےجیت کر دکھاؤں گا۔

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے سینیٹ الیکشن میں اپنا ووٹ بیچنے والے پی ٹی آئی کے بیس ارکان کے نام بتاتے ہوئے کہا تھا کہ ان افراد کو شوکاز دے رہے ہیں،اگر انہوں نے وضاحت نہ دی توان کے نام نیب کو دیں گے۔

جن اراکین کو شوکاز نوٹس دیا گیا ہے ان میں نرگس علی ،دینا ناز ،فوزیہ بی بی، نسیم حیات اورنگینہ حیات شامل ہیں جبکہ مردوں میں بابر سلیم ،سمیع اللہ زیب، یاسین خلیل، امجد آفریدی، قربان خان، زاہد درانی، سردار ادریس، عبید مایار، عبدالحق، جاوید نسیم، معراج ہمایوں، عارف یوسف، فیصل زمان، سیمی علی زئی اور وجیہہ الزمان شامل ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیاپر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں