site
stats
پاکستان

ڈاکٹرعامر لیاقت کو رینجرز کی تحویل سے رہا کردیا گیا

کراچی : رینجرز نے ڈاکٹرعامر لیاقت کو رہا کردیا گیا جبکہ ایم کیو ایم رہنما قمر منصور ، شاہد پاشا اور کنور نوید جمیل کو تین روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق رینجرز نے ایم کیوا ایم کے رہنما ڈاکٹرعامر لیاقت کو رہا کردیا گیا، انھیں گزشتہ روز انکے آفس سے حراست میں لیا گیا تھا۔

رہائی کے بعد ڈاکٹر عامر لیاقت کا اے آر وائی نیوز سے گفتگو میں کہنا تھا کہ پاکستان ہے تو ہم ہیں، پاکستان نہیں تو کچھ نہیں، انھوں نے ایم کیو ایم کے قائد کے بیان سے لاتعلقی کا اظہار کیا، عامر لیاقت کا ایم کیو ایم سے علیحدگی سے متعلق کہنا تھا کہ اس بارے میں ابھی کچھ نہیں کہہ سکتا، انھوں نے کہا میں شدید دباؤ میں ہوں۔

ایم کیو ایم قائد کی ملک مخالف تقریر پر ڈاکٹرعامر لیاقت نے ردِعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں پاکستان سے محبت کرتا ہوں اور مرتے دم تک کرتا رہوں گا۔

اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم قائد کے بیان کی مذمت کرتا ہوں اور ڈاکٹر فاروق ستار کی حمایت کااعلان کرتا ہوں۔

اس سے قبل کراچی کی انسداد دہشتگردی کی عدالت میں ایم کیو ایم کے رہنما قمر منصور ، شاہد پاشا اور کنور نوید جمیل کو پیش کیا گیا ، تینوں رہنماؤں کو منہ پر کپڑا ڈال کر سخت سکیورٹی میں عدالت لایا گیا تو وکلا اور شہریوں نے پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے۔

عدالت نے ایم کیو ایم کے رہنما قمر منصور ، شاہد پاشا اور کنور نوید جمیل کو تین روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔


 مزید پڑھیں : فاروق ستاراوراظہارالحسن رہا، کنورنوید جلیل اورقمرمنصورتحویل میں


ایم کیو ایم کے تینوں رہنماؤں کے خلاف 116/2016 اور 117/2016 کے تحت مقدمات درج ہیں، جس میں جلاؤ گھیراؤ، اشتعال انگیزی کے الزامات شامل ہیں ۔


 مزید پڑھیں : کراچی: ایم کیو ایم کارکنان کا اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملہ


اس سے قبل ایم کیو ایم کے 11 کارکنوں کو بھی رہنماؤں سے پہلے 3 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیا گیا ہے۔

گزشتہ روز متحدہ کے قائد کی پاکستان کیخلاف اشتعال انگیز تقریر اور اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملے کے بعد ایم کیو ایم کے رہنماؤں کو گرفتار کیا گیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top