The news is by your side.

Advertisement

ایم کیو ایم کے امیدوار کی رہائی کھٹائی میں پڑ گئی

کراچی: ایم کیو ایم پاکستان کے امیدوار اور کراچی پورٹ ٹرسٹ (کے پی ٹی) کے سابق چیئرمین جاوید حنیف کی الیکشن سے قبل  رہائی کھٹائی میں پڑ گئی۔

تفصیلات کے مطابق جاوید حنیف کی فوری رہائی سے متعلق  دائر درخواست کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے آئندہ سماعت پر نیب کو  یقینی طور پر جواب داخل کرانے کا حکم جاری کیا۔

نیب وکیل نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا کہ ’جاوید حنیف پر کرپشن اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے، ملزم نے کراچی پورٹ ٹرسٹ میں وزیرپورٹ اینڈ شپنگ بابر غوری کی مدد سے 940 غیر قانونی بھرتیاں کیں جس کے باعث قومی خزانے کو 2 ارب سے زائد کے نقصان ہوا‘۔

معزز جج نے سماعت 27 جولائی تک ملتوی کرتے ہوئے نیب کو آئندہ سماعت پر ہر صورت جواب داخل کرانے کا حکم دیتے ہوئے ریمارکس دیے کہ قومی احتساب بیورو کی رپورٹ کا جائزہ لینے کے بعد ہی کارروائی آگے بڑھائی جاسکتی ہے۔

مزید پڑھیں: کراچی پورٹ ٹرسٹ کے سابق چیئرمین جاوید حنیف نیب کے ہاتھوں گرفتار

واضح رہے کہ جاوید حنیف صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی ایس 95 سے متحدہ قومی موومنٹ کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ رہے ہیں۔

قومی احتساب بیورو نے سابق چیئرمین کو 3 جولائی کو حراست میں لیا تھا،  نیب نے گرفتار پر مؤقف اختیار کیا تھا کہ ملزم جاوید حنیف نے اپنے چیئرمین شپ کے دوران بابر غوری کے کہنے پر نو سو چالیس افراد کو غیر قانونی طور پر بھرتی کیا۔

نیب اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ جاوید حنیف کراچی پورٹ ٹرسٹ کے افسران کے خلاف تحقیقات کے سلسلے میں مطلوب تھے، متعدد بار انہیں طلب کیا گیا مگر  وہ حاضر نہ ہوئے۔

ایم کیو ایم پاکستان نے سابق چیئرمین کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اپنے امیدوار کی فوری رہائی کا مطالبہ بھی کیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں