The news is by your side.

Advertisement

مال روڈ احتجاج: ایم کیو ایم پاکستان کا وفد جلسے سے اٹھ کر چلا گیا

لاہور: ماڈل ٹائون شہدا کو انصاف دلانے کے لیے لاہور میں‌ منعقدہ جلسے میں جہاں‌ دیگر جماعتوں‌ نے بھرپور شرکت کی، وہیں‌ ایم کیو ایم پاکستان کا وفد بیچ جلسہ سے اٹھ کر چلا گیا.

تفصیلات کے مطابق ایک جانب جہاں پیپلزپارٹی، تحریک انصاف، مسلم لیگ ق سمیت دیگر جماعتوں کے قائدین نے جلسے سے خطاب کیا، وہیں ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کہیں دکھائی نہیں‌ دیے۔

یاد رہے کہ ایم کیو ایم پاکستان کے وفد نے ڈاکٹر فاروق ستار کی سربراہی میں چند روز قبل پاکستان عوامی تحریک کی آل پاکستان کانفرنس میں‌ شرکت کی تھی، مگر اے پی سی اعلامیے کو حتمی شکل دیتے ہوئے ایم کیو ایم کی جانب سے تحفظات کا اظہار کیا گیا تھا۔ ڈاکٹر فاروق ستارکا موقف تھا کہ شہبازشریف اور رانا ثنااللہ کا نام اعلامیہ میں شامل نہ کیا جائے۔ ان ہی اختلافات کے باعث ایم کیو ایم کا وفد اعلامیہ پر دستخط کیے بغیر اے پی سی سے واپس چلاگیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: طاہر القادری کی اے پی سی: ایم کیو ایم اور پی ایس پی کی شرکت کا فیصلہ

بہ ظاہر یوں‌ معلوم ہوتا ہے کہ ایم کیوایم پاکستان کے تحفظات برقرارہیں، اسی باعث کسی بڑے لیڈر نے جلسے میں‌ شرکت نہیں‌ کی اور نسبتاً غیرمعروف ارکان پر مشتمل وفد اجلاس میں شریک ہوا.

البتہ یہ کوشش سودمند ثابت نہیں ہوئی۔ ایم کیوایم کے وفد کو جلسےمیں خطاب کی دعوت نہیں ملی اور یہ وفد جلسہ ختم ہونے سے پہلےاٹھ کرچلا گیا.

یاد رہے کہ ایم کیو ایم نے اے پی سی اعلامیے میں شہباز شریف اور رانا ثنا کے استعفے کے مطالبے پر اتفاق نہیں کیا تھا.

تجزیہ کاروں‌ کے نزدیک موجودہ حالات میں‌ ایم کیو ایم پاکستان کا جھکائو مسلم لیگ ن کی جانب ہے. اس لیے جلسے میں پارٹی نے بھرپور شرکت نہیں کی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں