The news is by your side.

Advertisement

کراچی: حلقہ بندیاں اور مسائل، ایم کیو ایم نے چیف جسٹس اور آرمی چیف سے اپیل کردی

کراچی: متحدہ قومی موؤمنٹ پاکستان کے رہنماء خالدمقبول صدیقی نے چیف جسٹس سے اپیل کی ہے کہ وہ شہر میں ہونے والی حلقہ بندیوں پر ازخود نوٹس لیں اور آرمی چیف کراچی کو انصاف دلانے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

ایم کیو ایم پاکستان کے مرکز بہادرآباد میں رابطہ کمیٹی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ کراچی ملک کو 70 فیصد ریونیو دیتا ہے مگر اس پر وسائل خرچ کرنے کے بجائے اسے لوٹا جارہا ہے، شہر میں جتنی سیٹوں کا حق ہے اُس کی آدھی دی جارہی ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ  جب ووٹ کی توقیرنہیں ہو گی توعوام کو سڑکوں پر لانے کے لیے مجبور ہوجائیں گے، بجلی اورپانی کےمسائل ہمارے گھروں میں  بھی ہیں ، اپنے ووٹرز کے مسائل سے نہ صرف آگاہ ہیں بلکہ ان کو اجاگر کرنے کے لیے کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے۔

مزید پڑھیں: فاروق ستار اور خالد مقبول کی ملاقات بے نتیجہ، ایم کیو ایم متحد نہ ہوسکی

خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ ہم برابرکےوفاداراورحقدار ہیں ، ہم سے ٹیکس زیادہ لیاجاتاہے مگر کراچی کو جتنی صوبائی اور قومی اسمبلی نشستیں انصاف سے دی جانی چاہیں اُس کی آدھی دی جارہی ہیں، جس طرح حلقہ بندیاں کی گئیں اس پراعتراضات اٹھائے جارہے ہیں، ہمیں خوف ہے کہ متنازع حلقہ بندیاں کر کے الیکشن کو ملتوی کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔

ایم کیو ایم رہنماء خالد مقبول صدیقی نے چیف جسٹس سے اپیل کی کہ  وہحلقہ بندیوں اور کراچی کی آبادی کو مردم شماری میں کم دکھانے پر ازخود نوٹس لیں اور اس معاملے کو فوری طور پر حل کروائیں جبکہ آرمی چیف آف اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کراچی کو انصاف دلانے کے لیے کردار ادا کریں۔

متحدہ کے ڈپٹی کنونیئر کا مزید کہنا تھا کہ شہر کی آبادی کو حالیہ مردم شماری میں کم ظاہر کیا گیا جس کے خلاف عدالت میں درخواست دائر کی مگر وہ سردخانے کی  نظر ہوگئی، اگر شہر کو انصاف نہیں ملا توحالیہ امن عارضی ثابت ہوسکتا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں