ایم کیو ایم کا سابق یونٹ انچارج گرفتار، 12 مئی اور متعدد وارداتوں کا اعتراف
The news is by your side.

Advertisement

ایم کیو ایم کا سابق یونٹ انچارج گرفتار، 12 مئی اور متعدد وارداتوں کا اعتراف

کراچی: رینجرز نے پی آئی بی میں کارروائی کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے سابق یونٹ انچارج اشتیاق عرف ماما کو گرفتار کرلیا ہے جو 12 مئی سمیت ٹارگٹ کلنگ کی وارداتوں میں ملوث تھا۔

ترجمان رینجرز کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ’’رینجرز نے مصدقہ اطلاع پر گلشن اقبال ٹاؤن کے علاقے پی آئی بی میں کارروائی کرتے ہوئے ٹارگٹ کلر اشتیاق عرف ماما کو گرفتار کرلیا ہے۔

اعلامیے میں رینجرز کا کہنا ہے کہ ’’ملزم ایم کیو ایم کے اعلیٰ عہدیداروں کے حکم پر متعدد ٹارگٹ کلنگ کی وارداتوں اور سنگین جرائم میں ملوث تھا اور متحدہ کا یونٹ انچارج بھی رہ چکا ہے‘‘۔

ترجمان رینجرز کا کہنا ہے کہ کارروائی کے دوران ملزم کے قبضے سے ایک عدد ایس ایم جی، رپیٹر،3 آوران بم اور دیگر دیسی اقسام کا ایمونیشن برآمد کیا گیا ہے، ملزم کو مزید قانونی چارہ جوئی کے لیے پولیس کے حوالے کیا جارہا ہے۔

rangers

رینجرز کی جانب سے ملزم کی وارداتوں کی تفصیلات بھی دی گئیں ہیں جس میں بتایا گیا ہے کہ ’‘ اشتیاق عرف ماما 1993 سے 2007 کے دوران بلوچ نوجوانوں کے قتل میں ملوث رہاجبکہ 1995/96 میں حقیقی کے تین کارکنوں کا قتل کیا ہے‘‘۔

علاوہ ازیں ملزم نے 2008-2009 میں لیاری گینگ وار کے کارندے موسیٰ کو قتل کیا جبکہ سانحہ 12 مئی میں ملزم نے نجی ٹیلی ویژن کے آفس پر فائرنگ اور توڑ پھوڑ بھی کی ہے‘‘۔اشتیاق عرف ماما پر الزام ہے کہ اُس نے 1987 سے 2006 کے دوران ہونے والی ہڑتالوں میں خوف و ہراس پھیلایا اور کاروباری مراکز بھی بند کروائے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں