The news is by your side.

Advertisement

بدلتی سیاسی صورت حال: تحریک انصاف کا ایم کیو ایم سے رابطہ

کراچی: ملکی سیاسی صورت حال پر چھائی بے یقینی کی فضا نے حکومت کیمپ میں مشکلات پیدا کردی ہیں، گورنر سندھ آج اہم پیغام لیکر ایم کیو ایم کے مرکز جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق تحریک انصاف نے اتحادی جماعت ایم کیو ایم سےرابطہ کیا ہے اور گورنر سندھ عمران اسماعیل وفد کےہمراہ رات 8بجے ایم کیو ایم مرکز جائیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مرکز کی جانب سے گورنر سندھ اہم پیغام لے کر ایم کیو ایم مرکز جارہے ہیں، جہاں وہ ایم کیو ایم قیادت سے اہم ترین ملاقات کرینگے اس کے علاوہ عدم اعتماد سمیت سیاسی صورتحال پربات چیت کریں گے۔

واضح رہے کہ اپوزیشن رہنماؤں کی جانب سے بھی متحدہ قومی موومنٹ سے ملاقاتیں کی جاچکی ہیں، ان ملاقاتوں میں متحدہ نے جو مطالبات اپوزیشن جماعتوں کے سامنے رکھے اس کی تفصیلات اے آر وائی نیوز نے حاصل کرلی ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ایم کیو ایم نے پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمٰن اور سابق صدر آصف علی زرداری سے ملاقاتوں کے دوران جو مطالبات رکھے ہیں اگر اپوزیشن نے مان لیے تو ایم کیو ایم جلد اپنا سیاسی ڈرون گرائے گی۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ ایم کیو ایم نے اپوزیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ کے بلدیاتی اختیارات پر فیصلےکو من وعن عملدرآمد کیا جائے، اس کے علاوہ حلقہ بندیوں کے حوالے سے معاملات پر مشاورت پر بھی ایم کیو ایم کو شامل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: تحریک عدم اعتماد،ایم کیوایم نےاپوزیشن کےسامنےکیامطالبات رکھے؟

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم کے مطالبات میں سیاسی آزادی ، ایم کیو ایم دفاتر کی واپسی اور کھولنا ، رہنمائوں اور کارکنان پر جھوٹے مقدمات کا خاتمہ اور لاپتہ کارکنان کی واپسی اور اسیر کارکنان کی رہائی بھی شامل ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ سابق صدر اور پی پی پی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے ایم کیو ایم کو مطالبات کے حوالے سے یقین دہانی کرادی ہے۔

یاد رہے کہ اپنے حالیہ دورہ کراچی میں بھی وزیراعظم عمران خان نے پہلی بار بہادرآباد مرکز کا دورہ کیا تھا، وزیراعظم کے دورہ کے بعد ایم کیو ایم کا حیدرآبادمیں زونل آفس چھ سالہ بندش کے بعد کھول دیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں