The news is by your side.

Advertisement

صوبے بنانا غداری نہیں، صوبے نہ بنانا غداری ہے، خالد مقبول صدیقی

کراچی: وفاقی وزیر اور ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ صوبے بنانا غداری نہیں بلکہ صوبے نہ بنانا غداری ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر برائے آئی ٹی اور ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ ہمارا موقف ہے آبادی کے لحاظ سے انتظامی یونٹس بڑھنے چاہئیں، موجودہ صوبوں کا کلیم لسانی بنیادوں پر کیا جاتا رہا ہے۔

خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ پاکستان میں ضرورت کے مطابق نئے صوبے بنائے جائیں، صوبے بنانا غداری نہیں بلکہ صوبے نہ بنانا غداری ہے، پاکستان کے آئین میں صوبے بنانے کا فارمولا لکھا ہے۔

ایم کیو ایم کے کنوینر نے کہا کہ سندھ کے مفاد کے خلاف کوئی کام نہیں کریں گے، ایک جماعت نے سندھ کو لسانی بنیاد پر تقسیم کردیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما فیصل سبزواری کا کہنا تھا کہ نئے صوبے سے متعلق وزیراعظم کا موقف ان کی جماعت کی رائے ہوسکتی ہے۔

مزید پڑھیں: نئے بلدیاتی نظام کے بعد سندھ میں کسی تقسیم کی ضرورت نہیں ہوگی: وزیر اعظم

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی سیاسی حکمت عملی سے قطع نظر شہری سندھ کے عوام جنوبی سندھ صوبے کے لیے جدوجہد جاری رکھیں گے، شہری سندھ کے عوام اپنا مفاد بہتر سمجھتے ہیں۔

فیصل سبزواری کا کہنا تھا کہ دس سال کے دوران دو ہزار ارب روپے کا فنڈ چوری کرکے سندھ کے شہروں کا استحصال کیا گیا، جعلی ڈومیسائل کے ذریعے روزگار چھینا گیا، ہزاروں نوکریوں پر ڈاکا ڈالا گیا۔

یاد رہے کہ دو روز قبل وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی سندھ میں ایک اور صوبہ بنانے کے خلاف ہے، پی ٹی آئی کے نئے بلدیاتی نظام کے بعد سندھ میں مزید صوبوں کی ضرورت نہیں رہے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں