انسدادِ دہشتگردی عدالت کا ایم کیو ایم رہنما سلیم شہزاد کو جیل بھیجنے کا حکم -
The news is by your side.

Advertisement

انسدادِ دہشتگردی عدالت کا ایم کیو ایم رہنما سلیم شہزاد کو جیل بھیجنے کا حکم

کراچی: انسدادِ دہشتگردی عدالت نے ایم کیو ایم رہنما سلیم شہزاد کو جیل بھیجنے کا حکم دیدیا ہے، گزشتہ روز سلیم شہزاد کو کراچی ایئر پورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیوایم کے بانی رکن سلیم شہزاد سلیم شہزاد کو انسدادِ دہشتگردی عدالت میں پیش کیا گیا ، عدالت نے پولیس کو حکم دیا کہ سلیم شہزاد کے سامان کی رپورٹ جمع کرائے۔

سلیم شہزاد نے پیشی کے دوران عدالت کو بتایا کہ کئی برس سے وہ لندن میں مقیم ہیں انکا اس مقدمے سے کوئی تعلق نہیں لہذا انہیں بری کیا جائے، عدالت نے ابتدائی سماعت کے تفتیشی افسر کی استدعا پہ سیلم شہزاد کو اٹھارہ فروری تک جیل بھیجنے کا حکم دیا۔

سلیم شہزاد کے وکیل کا کہنا تھا کہ ائیرپورٹ سے ہائیکورٹ جانا تھا لیکن وہاں گرفتار کرلیا گیا۔

سلیم شہزاد نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ رضاکارانہ طور پر پاکستان آئے ہیں، جگر کا کینسر ہے،ضمانت د ی جائے، حفاظتی ضمانت کے قانون کا پتہ نہیں تھا جس پر فاضل جج نے ریمارکس میں کہا آپ اتنا شور مچا کر آئے ہیں حفاظتی ضمانت کا علم نہیں تھا۔

عدالت نے بی کلاس کی درخواست پر متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرتےہوئےحکم دیاکہ ملزم کامیڈیکل چیک اپ کرایا جائے۔

سلیم شہزاد اس مقدمے میں ریجرز کے وکیل اور پولیس کے تفتیشی افسر ایک دوسرے مدمقابل ہیں، رینجرز کے وکیل کے مطابق تفتیشی افسر نے اس کیس کو شروع سے نقصان پہنچایا ہے، ساجد محمود وکیل رینجرز دہشتگردوں کے علاج معالجے کے اس مقدمے میں دیگر ناملزد ملزمان عدالت سے ضمانت حاصل کرچکے ہیں۔

سلیم شہزاد دہشتگردوں کے علاج سے متعلق مقدمے میں نامزد ہیں جبکہ عدالت نے ان کی گرفتاری کے لیے وارنٹ جاری کیے تھے۔

عدالت پہنچنے پر سلیم شہزاد سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدالتوں پر اعتماد ہے، 300سے زائد مقدمات1992 سے پہلے درج کئے گئے،
مقدمات این آر او کے ذریعے ختم ہوئے ، اسوقت میرےخلاف صرف ایک مقدمہ ہے، ایک مقدمے میں مجھے گرفتار کیا گیاہے۔

صحافی نے سلیم شہزاد سے سوال کیا کہ کس جماعت میں جارہے ہیں تو انکا کہنا تھا کہ پہلے یہ تو طے ہو کون مجھ سے نکاح کرنے کو تیار ہے کراچی میں کراچی کی سیاست ہوگی، مستقبل کے فیصلے کا اعلان جلد کروں گا۔

سلیم شہزاد نے مزید کہا کہ پی ایس پی والے بچے ہیں، جب میں سیاست میں تھا یہ نہیں تھے، پی ٹی آئی والے اگر میری آمد پرخوش ہیں تو اچھی بات ہے۔

گزشتہ روز ایم کیوایم کے بانی رکن سلیم شہزاد کو کراچی ائیرپورٹ پہنچے پر گرفتار کر کے ان کا پاسپورٹ ضبط کر لیا گیا اور پولیس پارٹی بکتربند گاڑی میں گڈاپ تھانے لے گئی تھی۔


مزید پڑھیں : ایم کیوایم رہنما سلیم شہزاد کراچی ایئرپورٹ سے گرفتار


سلیم شہزاد کے خلاف مختلف تھانوں میں 20سے زائد مقدمات ہیں، ان کے خلاف ملک دشمنی، قتل، جلاؤ گھیراؤ، فائرنگ کے مقدمات ہیں۔ یہ مقدمات گلشن اقبال، اورنگی ٹاؤن، لانڈھی،بلدیہ اورسرجانی تھانوں میں درج ہیں۔

پاک سرزمین کے سربراہ مصطفی کمال کا کہنا ہے کہ ہماری جماعت میں سلیم شہزاد کی کوئی گنجائش نہیں ہے، ان کا وزن زیادہ ہے، سیلم شہزاد کی شمولیت سے ہماری کشتی ڈوب سکتی ہے۔

گرفتاری کے بعد ایم کیو ایم رہنما سلیم شہزاد کا ویڈیو بیان ریکارڈ کیا گیا ، اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا کہ 22 اگست 2016 کو ایم کیو ایم لندن سے لاتعلقی کا اعلان کر چکا ہوں۔ پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگایا تو میرا لندن سے تعلق ختم ہوگیا۔ میں محب الوطن لوگوں کے ساتھ ہوں۔


مزید پڑھیں : پاکستان زندہ باد، لندن سے تعلق ختم کرچکا: سلیم شہزاد کا بیان


واضح رہے کہ سلیم شہزاد سنہ 1992 میں ایم کیو ایم کے خلاف ہونے والے آپریشن کے بعد خود ساختہ جلا وطنی اختیار کرگئے تھے۔ گذشتہ سال 22 اگست کے واقعے کے بعد سلیم شزاد نے اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے بانی ایم کیو ایم سے لاتعلقی کا اعلان کیا تھا

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں