The news is by your side.

Advertisement

متحدہ لندن کے خلاف کریک ڈاؤن جاری، چوتھے رہنما ظفر راجپوت بھی گرفتار

حیدرآباد : متحدہ قومی موومنٹ لندن کے خلاف رینجرز کا کریک ڈائون جاری ہے، رینجرز نے حیدرآباد سے ایم کیو ایم لندن کے رہنما ظفر راجپوت کو بھی حراست میں لے لیا جس کے بعد گرفتار رہنماؤں کی تعداد چار ہوگئی۔


یہ پڑھیں: متحدہ لندن کے رہنما حسن ظفر اور کنور خالد پریس کلب سے زیر حراست


تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم لندن کے خلاف کراچی اور حیدرآباد میں کریک ڈاؤن شروع کردیا گیا، رینجرز اہلکاروں نے کراچی پریس کلب سے پریس کانفرنس کے لیے والے ایم کیو ایم لندن کے رہنما حسن ظفر عارف کنورخالد یونس اورامجداللہ کے بعد حیدرآباد کے علاقے تلک چاڑی پر موجود ان کی رہائش گاہ سے ایم کیو ایم لندن کے رہنما ظفر راجپوت کو بھی اپنی حراست میں لے لیا ہے۔

ایم کیو ایم لندن کے رہنما ظفر راجپوت کو تلک چاڑی میں ان کے گھر سے حراست میں لیا گیا۔ حیدرآباد میں ایم کیوایم لندن کے رہنما منظرعام پر آئے۔ پکا قلعہ میں شہید کارکنوں کی قبروں پر حاضری دی۔

قبرستان آنےوالوں میں مومن خان مومن، ظفرراجپوت اوردوسرے ارکان بھی شامل تھے۔ کچھ دیربعد ظفر راجپوت کو حراست میں لے لیا گیا۔ رینجرز کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے ظفر راجپوت حیدرآباد کے نائب ناظم رہے ہیں۔ ظفر راجپوت ایم کیو ایم لندن کی ایڈہاک کمیٹی کے ممبر بھی ہیں۔

ان کےعلاوہ بھی کئی رہنماؤں کےگھروں پر چھاپےمارے گئے ذرائع کا کہنا ہے کہ حیدرآباد میں ایم کیوایم لندن کےرہنما گھروں پر موجود نہیں اوران سے کوئی رابطہ بھی نہیں ہوپارہا۔

دوسری جانب ایم کیوایم پاکستان نے ظفر راجپوت سمیت سندھ تنظیمی کمیٹی کے چار اور حیدر آباد ڈسٹرکٹ کے سات ارکان کی رکنیت خارج کردی ہے۔

گرفتاری کے وقت رینجرز اہلکاروں نے ظفر راجپوت کے گھر کی تلاشی بھی لی۔ رہنماؤں کی گرفتاری کے باعث ایم کیوایم لندن کی کراچی میں پریس کانفرنس ملتوی کردی گئی۔

مزید پڑھیں: متحدہ رہنما امجد اللہ پریس کلب سے باہر نکل آئے، رینجرز نے گرفتار کرلیا

 اس کے علاوہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے لندن رابطہ کمیٹی کے رکن ساتھی اسحاق کے گھرپر بھی چھاپہ مارا۔ چھاپے کے وقت ساتھی اسحاق گھر پرموجود نہیں تھے۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم لندن کے رہنماؤں کے خلاف کریک ڈاؤن کے بعد ان کے بقیہ رہنما ابھی اپنے گھروں سے غائب ہیں۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں