The news is by your side.

Advertisement

پاکستان مخالف بیانات، فاروق ستار کا ایم کیو ایم قائد کے خلاف قرارداد لانے کا فیصلہ

کراچی :ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے پاکستان مخالف بیانات پر بانی ایم کیو ایم کے خلاف قرارداد لانے کا فیصلہ کرلیا ہے، قرارداد میں پاکستان مخالف بیانات کی مذمت کی جائے گی۔

ایم کیو ایم پاکستان نے ایک اور بڑا فیصلہ کرتے ہوئے پارلیمنٹ میں بانی ایم کیو ایم کے خلاف قرارداد لانے کی تیاری کرلی ہے، قرارداد کے متن پر ایم کیو ایم پاکستان کےپارلیمانی رہنماؤں کی مشاورت جاری ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ قرارداد میں بانی ایم کیو ایم کے پاکستان مخالف بیانات کی پر زور مذمت کی جائے گی جبکہ قرارداد میں ملک مخالف بیانات دینے والے دیگرسیاست دانوں کی بھی مذمت کی جائے گی

ذرائع کے مطابق الطاف حسین مخالف بیان پر قرارداد اسمبلی کے آئندہ اجلاس میں پیش کئے جانے کا امکان ہے، اپنے ہی بانی کے خلاف پاکستان کی کسی بھی سیاسی جماعت کی یہ پہلی قرارداد ہوگی۔

دوسری جانب دیگرسیاسی جماعتیں بھی بانی ایم کیو ایم کے خلاف قرارداد لانے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔


 مزید پڑھیں : فاروق ستار کا بانی ایم کیو ایم اور لندن قیادت سے لاتعلقی کا اعلان


یاد رہے کہ ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے بانی ایم کیو ایم کی ملک مخالف تقریر کے بعد ایم کیو ایم لندن سے لاتعلقی کا اعلان کردیا تھا اور کہا تھا کہ ایم کیو ایم پاکستان نے 23 اگست کو ایک لکیر کھینچ دی اور اب ہم  خود مختار ہیں، اب تمام الفاظ اور نیت سب ہمارے ہی ہوں گے کسی کو شک کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔


 مزید پڑھیں:  کراچی: ایم کیو ایم کارکنان کا اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملہ


واضح رہے کہ 22 اگست کو پریس کلب پر ایم کیو ایم قائد کی تقریر کے بعد ڈنڈے اٹھائے کارکن زینب مارکیٹ کے قریب اے آروائی کے بیورو آفس پر جمع ہوئے اور پتھراؤ کرکے شیشے توڑ ڈالے اور پھر بے قابو ہجوم دروازہ توڑ کر دفتر میں گھس گیا، اے آر وائی کے دفتر میں پہلے خواتین داخل ہوئیں اور ان کے پیچھے دیگر مسلح افراد آگئے، غنڈوں نے عملے کو تشدد کا نشانہ بنایا، کمپیوٹر توڑ ڈالے اور گارڈ سے اسلحہ چھیننے کی کوشش کی گئی۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں