The news is by your side.

Advertisement

‘معلوم نہیں کون سے نامعلوم افراد دکانیں بند کروا رہے تھے’

گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کی غلطی ہےکہ ایم کیوایم مظاہرین سےطاقت سے نمٹنے کی کوشش کی لیکن معلوم نہیں رات کو کون سے نامعلوم افراد دکانیں بند کرا رہےتھے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے عمران اسماعیل نے کہا کہ مظاہرین پر بےدریغ لاٹھی چارج اور شیلنگ کی گئی وزیراعظم کو کہا پولیس کے رویے پر ایکشن ہونا چاہیے وزیرداخلہ نے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کی ہے۔

گورنرسندھ نے کہا کہ وفاقی حکومت کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا پولیس صوبائی معاملہ ہےلیکن کھلانہیں چھوڑا جا سکتا، حکومتوں کو چاہیے مظاہرین سے ڈائیلاگ سے مسئلہ حل کیا جائے کل جوپولیس نےرویہ اپنایایہ آخری حربہ ہوتا ہے لیکن ایسےبھی نہیں، ایم پی اےکوجس طرح گھسیٹاجارہاہےکل پوری قوم نےدیکھا ہمارے دور میں بھی مظاہرے ہوئے لیکن ایسا راستہ نہیں اپنایا کل مسئلےکاپرامن حل نکل سکتاتھااگرسندھ حکومت مذاکرات کرتی۔

ان کا کہنا تھا کہ معلوم نہیں رات کو کون سے نامعلوم افراد دکانیں بند کرا رہے تھے بازار وغیرہ کی دکانیں ویسے بھی رات 9 بجے بند ہونا شروع ہو جاتی ہیں ہوسکتاہےچندلوگوں نےدکانیں بندکرانےکی کوشش کی ہو مگر ماضی جیسے نامعلوم افراد اور ہوائی فائرنگ کا واقعہ پیش نہیں آیا۔

گورنر نے کہا کہ آج بھی سمجھتاہوں سندھ حکومت کابلدیاتی ایکٹ مناسب نہیں بڑےشہروں کیساتھ زیادتی ہو گی، میئر ناکارہ ہو جائے گا حکومت ایک نوٹیفکیشن سے میئر سے سارے اختیارات واپس لے سکےگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں