site
stats
سندھ

اسیر کارکن کی اہلیہ کو دھمکیاں دینا شرمناک عمل ہے، رابطہ کمیٹی

کراچی : متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس انورظہیرجمالی سے اپیل کی ہے کہ ایم کیوایم کے اسیرکارکن آصف کی اہلیہ کوسرکاری اہلکاروں کی جانب سے دی جانے والی دھمکیوں کافوری نوٹس لیاجائے اورانہیں تحفظ فراہم کیاجائے۔

اپنے ایک بیان میں رابطہ کمیٹی نے کہاکہ 11مار چ 2015ء کوایم کیوایم کے مرکزنائن زیروپر رینجرزکے چھاپے کے دوران رینجرزاہلکاروں کی فائرنگ سے ایم کیوایم کے جواں سال کارکن وقاص شاہ شہید ہوگئے تھے لیکن رینجرزنے اس کے الزام میں ایم کیوایم کے ہی ایک اورکارکن آصف کوگرفتارکرلیااوراس جھوٹے مقدمے میں انہیں سزادلانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

آصف کی اہلیہ نورین جوعدالت میں اپنے شوہرکی بے گناہی کامقدمہ لڑرہی ہیں لیکن انہیں انصاف فراہم کرنے کے بجائے سرکاری اہلکاروں کی جانب سے آصف کی اہلیہ کوبھی جان سے مارنے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں اوران پر دباؤڈالاجارہاہے کہ وہ مقدمہ سے الگ ہوجائیں۔

رابطہ کمیٹی کے بیان کے مطابق آج آصف کی اہلیہ نے یہ تمام تفصیلات اوراپنے خدشات ایک پریس کانفرنس میں بیان کئے ہیں اُن کے بیان کیے گئے حقائق انتہائی تشویشناک اور قابل مذمت ہے اور ان دھمکیوں سے صاف ظاہر ہے کہ آصف کواس کیس میں پھنسایاگیاہے اوراب اسے سزادلانے کی کوشش کی جارہی ہے تاکہ وقاص شاہ کے قتل میں ملوث سرکاری اہلکاروں کو بچایا جائے۔

رابطہ کمیٹی نے چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس انورظہیرجمالی سے اپیل کی کہ آصف کی اہلیہ نورین کوسرکاری اہلکاروں کی جانب سے دی جانے والی دھمکیوں کا فوری نوٹس لیاجائے اور انہیں تحفظ فراہم کیاجائے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top