The news is by your side.

Advertisement

ایم کیو ایم نے اراکین قومی اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافہ کی تجویزمسترد کردی

کراچی: قومی اسمبلی میں متحدہ قومی موومنٹ کے اراکین نے ملک و قوم کی موجودہ صورتحال کے تناظر میں قومی اسمبلی کے اراکین کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافہ کو مستردکردیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ کے اراکینِ قومی اسمبلی نے اراکین کی تنخواہوں میں ہوشربا اضافہ کے حوالے سے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ اگر ملک میں امن و امان، ترقی و خوشحال کا دور ہوتا، جب بھی اراکین اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافے کو معیوب سمجھا جاتا۔

انہوں نے کہا کہ اراکین قومی اسمبلی جس منتخب ایوان میں بیٹھے ہیں انہیں اپنے مسائل اور آسائشوں کو نہیں بلکہ ملک و قوم کے مسائل اور عوامی نمائندگی کا حق ادا کرنے کی فکر ہونی چاہئیے۔

اراکین اسمبلی کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے سے ملک بھر کے عوام میں مایوسی کا عنصر جنم لے گا اور وہ یہ سوچنے پر مجبور ہوں گے کہ منتخب نمائندے عوامی مسائل کو بھول کر اپنی مراعات اور خواہشات کی تکمیل میں لگے ہوئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اس وقت مقروض اور بے ضابطگیوں کا شکار ہے، ایسے وقت میں تنخواہوں اور مراعات میں اضافہ کرنا غیرمناسب اور غیر اخلاقی عمل ہے۔

متحدہ قومی موومنٹ کے اراکین اسمبلی نے چیئرمین سینٹ رضا ربانی کی جانب سے تنخواہوں اور مراعات میں اضافہ نہ کرنے کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’رضا ربانی نے اضافہ مسترد کر کے انتہائی اہم اور مشکل فیصلہ کیا ہے، جو قابلِ تعریف ہے‘‘۔

اس موقع حق پرست اراکین اسمبلی نے وزیر اعظم پاکستان سے مطالبہ کیا کہ اراکین قومی اسمبلی کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کا نوٹس لے کر اس کو ملک و قوم کے حالات کو مدِنظر رکھتے ہوئے مسترد کردیا جائے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں